Papita Rozana Khaiye Faida De Ga - Article No. 2344

پپیتا روزانہ کھایئے فائدہ دے گا - تحریر نمبر 2344

ہفتہ 8 جنوری 2022

Papita Rozana Khaiye Faida De Ga - Article No. 2344
پپیتا بے حد مفید پھل ہے مگر عموماً لوگ اس کے ذائقے کی وجہ سے اسے دوسرے پھلوں پر فوقیت نہیں دیتے اور اسے بوڑھوں یا قبض کے مریضوں کے لئے مفید اور محفوظ خیال کیا جاتا ہے۔کچے پپیتے کو گوشت گلانے کے لئے تریاق سمجھنا غلط نہیں ہوتا۔آپ نے بقرہ عید پر سبزی فروشوں کے یہاں چھوٹے بڑے سائز کے کچے پپیتے بکتے دیکھے ہوں گے۔خواتین کیمیائی شکل والے گوشت گلانے کے سفوف سے کہیں بہتر سمجھتی ہیں کہ کچا پپیتا اس مقصد کے لئے استعمال کیا جائے جو طبی اعتبار سے بھی محفوظ ترین انتخاب ہے۔


ابتداء میں پپیتے کا رنگ بھی سبزی مائل ہی ہوتا ہے لیکن جوں جوں پکتا چلا جاتا ہے نارنجی اور زردی مائل ہوتا چلا جاتا ہے اور مٹھاس بھری مہک جو اس پھل کی مخصوص ہے اُبھر آتی ہے۔
روزمرہ کی غذائی ضروریات کی تکمیل
پپیتے میں ہمیں پروٹین،معدنی اجزاء،وٹامنز،(CاورE) مل جاتے ہیں۔

(جاری ہے)

یہ پھل روزمرہ کی غذائی ضروریات کی تکمیل بھی کرتا ہے اور ناصرف خود آسانی سے ہضم ہوتا ہے بلکہ دوسری ثقیل غذاؤں کو بھی ہضم کرنے میں مدد دیتا ہے۔

اسے کھا کر طبیعت ہلکی ہوتی ہے۔پپیتا جب بھی کھائیں پکا ہوا کھائیں۔بچوں کے لئے یہ اچھا ٹانک ہے خصوصاً جو ڈبے کا دودھ پیتے ہیں اور انہیں قبض کی شکایت بھی ہوتی ہے۔پپیتے میں موجود دودھ سخت پروٹین کو بھی جلد ہضم کرتا ہے۔یہ قدرتی طور پر ایسے انزائمر پر مشتمل ہوتا ہے جو روغنی یا ثقیل (بھاری) غذاؤں کو ہضم کرنے میں مدد دیتے ہیں۔
کچا پپیتا بھی مضر نہیں
کچے پپیتے میں ایک خاص جز Papain موجود ہے جو معدے کی بیماریوں،بدہضمی اور آنتوں کی خراش دور کرنے میں بہت مفید ہے۔

گوشت گلانے کی غیر معمولی صلاحیت کا ذکر ابتداء میں ہو چکا ہے۔پپیتے کے بیجوں کا رس خونی بواسیر میں اکسیر ہوتا ہے۔پیٹ کے کیڑے ہلاک کرنے میں بھی کچے پپیتے کا بڑا کمال موجود ہے۔بچوں کو چھوٹا سا ٹکڑا بھی کھلا دیا جائے مگر شہد اور نیم گرم پانی کے ساتھ دیا جائے تو فائدہ ہوتا ہے۔
پپیتے کے پتے اور رس بھی شفا کے حامل ہوتے ہیں۔ان پتوں میں موجود الکلائی کارپین نامی ایک جزو بھی پیٹ کے کیڑوں کو خارج کرتا ہے۔

کچے پپیتے کا رس جلد کی کئی بیماریوں میں شفا بخش ثابت ہوتا ہے۔اعضاء پر سوجن آ جائے۔پس یعنی پیپ بن سکتی ہو۔مسوں اور پھنسیوں کا خاتمہ کرنا ہو تو یہ رس لگانے سے آرام ملتا ہے۔جلد پر نرمی آتی ہے اور انفیکشن ختم ہوتا ہے۔یرقان کے مریضوں کو پپیتے کے پتوں کا رس دیا جاتا ہے۔پپیتے کے بیج بھی بہت کارآمد ہوتے ہیں۔غذائیت کی کمی یا منشیات کے استعمال سے جگر سکڑ جاتا ہے اس مسئلے کا حل پپیتے کے بیجوں میں موجود ہے۔

بیجوں کو کچل کر رس نکال دیا جائے اور لیموں کے کچھ قطرے ملا کر متاثرہ شخص کو دیئے جائیں تو جلد افاقہ ہوتا ہے۔
مغربی اور چند ایشیائی ملکوں کے باسی ناشتے میں پپیتے کی ایک پھانک کھا کر دن کا آغاز کرتے ہیں۔ہمارے یہاں متوسط اور اعلیٰ متوسط گھرانوں میں اسے اتنی مقبولیت حاصل نہیں جبکہ یہ بے حد مفید پھل ہے۔اسے روزانہ اکیلا یا دیگر پھلوں کے ساتھ چاٹ کی شکل میں کھانا فائدہ دے سکتا ہے۔
تاریخ اشاعت: 2022-01-08

Your Thoughts and Comments