Pea - Khane Ke Fawaid - Article No. 2345

مٹر کھانے کے فوائد - تحریر نمبر 2345

پیر 10 جنوری 2022

Pea - Khane Ke Fawaid - Article No. 2345
شازیہ خان
پھلیوں میں شمار کی جانے والی سبزی مٹر موسم سرما میں باآسانی دستیاب ہوتی ہے،مٹر کے چھوٹے چھوٹے دانے صحت کے لحاظ سے نہایت فائدہ مند اور مجموعی صحت کے لئے مفید قرار دیئے جاتے ہیں۔غذائی ماہرین کے مطابق مٹر کو ہری سبزی ہونے کے سبب ”پاور فوڈ“ بھی کہا جاتا ہے،مٹر میں کئی غذائی اجزاء موجود ہوتے ہیں جو کہ انسانی صحت اور تندرستی کے لئے بے حد ضروری ہیں،مٹر میں آئرن،فائبر،پروٹین،وٹامن اے،ایچ،بی،ای اور سی پائے جاتے ہیں۔

ماہرین کے مطابق اس میں پروٹین 23 فیصد،کاربوہائیڈریٹس 50 فیصد جبکہ وٹامن بی کافی مقدار میں پایا جاتا ہے،اس میں سلفر اور فاسفورس بھی دیگر اجزاء کی نسبت زیادہ مقدار میں موجود ہوتا ہے،مٹر کی تاثیر گرم ہوتی ہے جبکہ یہ جسم کو غذائیت پہنچا کر پٹھوں اور اعصاب کو مضبوط بناتا ہے۔

(جاری ہے)

غذائی ماہرین کا کہنا ہے کہ مٹر ہر عمر کے فرد کے لئے مفید سبزی ہے مگر اسے وزن میں کمی لانے کے خواہشمند افراد کے لئے مفید قرار نہیں دیا جاتا ہے۔

مٹر قدرت کی ایک زبردست نعمت ہے۔یہ سستی اور باآسانی دستیاب ہونے والی سبزی ہے۔مٹر کے چند فوائد اور خصوصیات درج ذیل ہیں:
خون میں اضافہ
مٹر کو اپنے کھانے کا حصہ بنانے سے کئی فوائد حاصل ہوتے ہیں۔مٹر کا سب سے بڑا فائدہ ان مریضوں کو ملتا ہے،جن کے جسم میں خون کی کمی ہوتی ہے۔طبی ماہرین کے مطابق مٹر نیا خون بنانے میں کسی بھی دوا سے زیادہ موثر کردار ادا کرتے ہیں۔

مٹر کھانے سے جسم میں نشاستہ کی کمی پوری ہو جاتی ہے۔یہ جسم میں پروٹین اور فولاد کی کمی کو بھی پورا کرتے ہیں۔مٹر کھانے سے خون میں صرف اضافہ ہی نہیں ہوتا بلکہ صاف اور صالح خون پیدا ہوتا ہے۔کمزور اور ناتواں جسم کے لئے یہ انتہائی فائدہ مند ہے،اسے کھانے سے جسم فربہ ہوتا ہے۔
بُرے کولیسٹرول کو کم کرتا ہے
مٹر میں فیٹ یا چربی بہت کم ہوتی ہے۔

ایک کپ میں 100 کیلوریز ہوتی ہیں جبکہ پروٹین،فائبر اور مائیکرو نیوٹرینٹس بڑی مقدار میں موجود ہوتے ہیں۔اس کے استعمال سے وزن نہ زیادہ بڑھتا ہے نہ ہی کم ہوتا ہے،بلکہ اس میں توازن برقرار رہتا ہے۔
معدے کے کینسر سے بچاتا ہے
مٹر میں کولیسٹرول نامی ایک غذائی جزو موجود ہوتا ہے،جو صحت کے لئے بے حد فائدہ مند ہے۔میکسیکو میں ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق،اگر جسم کو 2 ملی گرام کولیسٹرول حاصل ہو جائے تو معدے کے کینسر کا خطرہ کافی حد تک کم ہو جاتا ہے۔

مٹر کے ایک کپ میں 10 ملی گرام کولیسٹرول پایا جاتا ہے۔
الزائمر اور گنٹھیا کے مرض سے بچاتا ہے
مٹر میں اینٹی انفلیمیٹری یعنی سوزش دور کرنے والی خصوصیات پائی جاتی ہیں۔اس کا مطلب یہ ہوا کہ جو شخص مختلف سوزش کا شکار ہو،ایسے افراد کے لئے مٹر کسی نعمت سے کم نہیں۔سوجن بڑھنے سے کینسر،امراض قلب اور بڑھتی عمر کے اثرات تیزی سے ظاہر ہونے کے خطرات بڑھ جاتے ہیں۔اس کے ساتھ ساتھ،مٹر میں اومیگا تھری فیٹی ایسڈز،وٹامن سی اور وٹامن ای کی کثیر مقدار پائی جاتی ہے،جن سے الزائمر کے مریضوں کو بے حد فائدہ پہنچتا ہے۔اس کے علاوہ،مٹر میں پایا جانے والا وٹامن بی،گنٹھیا کے خطرات کو کم کرتا ہے۔
تاریخ اشاعت: 2022-01-10

Your Thoughts and Comments