Sans Ka Marz - Article No. 2106

سانس کا مرض - تحریر نمبر 2106

پیر مارچ

Sans Ka Marz - Article No. 2106
سانس کی ایک بیماری جسے طبی زبان میں استھما کہا جاتا ہے،بہت تکلیف دہ ہوتی ہے۔یہ پھیپھڑوں کی ایک بیماری ہے۔جب سانس لینے میں دشواری محسوس ہو،سانس لینے کے دوران کھڑکھڑاہٹ کی آواز سنائی دے،سینے کی جکڑن اور کھانسی کا اکثر و بیشتر سامنا ہو تو ممکن ہے کہ یہ مرض دمہ ہو۔یہ مرض عام طور پر الرجک ردعمل یا دیگر امراض کے باعث زیادہ حساس ہونے کی وجہ سے لاحق ہوتا ہے۔

سانس کا مرض موروثی وجہ سے اور پھیپھڑوں کی دو بڑی سانس کی نالیاں جو سانس لینے میں مددگار ہوتی ہیں ان میں سوزش کی وجہ سے ہوتا ہے۔
سانس کی بیماری کی علامات
وقفے وقفے سے کھانسی آنا۔خاص طور سے رات کو سونے کے لئے لیٹتے ہی کھانسی کا شروع ہو جانا۔
سانس لینے میں تکلیف اس مرض کی ایک بنیادی علامت ہے۔

(جاری ہے)


تھوڑی سی حرکت کرنے سے سانس پھول جانا اور بحال ہونے میں کافی وقت لگنا۔


سینے پر بھاری پن یا سختی محسوس ہونا۔
سانس لینے یا سانس باہر نکالتے وقت سیٹی یا سرسراہٹ محسوس ہونا۔
سونے میں دشواری اور سوتے میں ناک بند ہو جانا یا سانس صحیح طرح نہ لے پانے کی وجہ سے بار بار آنکھ کھلنا۔
بچاؤ کے طریقے
تکیے بستر وغیرہ کو بیکٹیریا اور جراثیم سے بچانے کے لئے انہیں با قاعدگی سے دھویا جائے۔


پالتو جانوروں کو بستر اور فرنیچر وغیرہ سے دور رکھا جائے۔
کوشش کی جائے کہ بیڈ روم میں قالین نہ بچھائیں۔
سگریٹ نوشی سے گریز کیا جائے۔ایسے لوگوں کے ساتھ نہ بیٹھیں جو سگریٹ نوشی کر رہے ہوں۔
گھر کی صفائی وغیرہ میں زیادہ تیز کیمیکل یا بلیچ وغیرہ نہ استعمال کیا جائے۔
پریشانیوں اور ذہنی تناؤ سے جتنا ممکن ہو دور رہا جائے۔

یہ سانس کے مرض کی ایک بڑی وجہ بن سکتے ہیں۔
مفید گھریلو ٹوٹکے
انجیر بلغم خارج کرنے میں مدد دیتی ہے۔کھانسی اور دمہ میں اس کے استعمال سے فائدہ ہوتا ہے۔
چھوہارہ اور ادرک،پان میں تھوڑا تھوڑا رکھ کر کھانے سے بلغمی کھانسی اور دمے میں افاقہ ہوتا ہے۔ایک وقت میں پانچ سے زیادہ چھوہارے اور ادرک کے ٹکڑے نہ کھائیں۔


آدھا گرام سونف کو منہ میں رکھ کر چبانا اور اس کے رس کو اندر نگلتے رہنا یہ کھانسی اور دمہ کے لئے مفید ہے۔
پسی کالی مرچ،شہد کے ساتھ ملا کر چاٹنے سے کھانسی،سینے کا درد دور کرنے اور پھیپھڑوں سے بلغم جلد خارج کرنے میں مدد ملتی ہے۔ البتہ گردے کے درد میں مبتلا افراد اس سے گریز کریں۔
چھوٹی الائچی،دمہ اور کھانسی میں مفید ہے۔
لہسن پھیپھڑوں کی سل،کھانسی،دمے اور کالی کھانسی میں فائدہ دیتا ہے۔


بچوں میں سانس کی تکلیف کے لئے گرم دودھ میں ہلدی،نمک اور گڑ ڈال کر پلانے سے بچوں کو سردی،کھانسی اور سانس لیتے وقت ہونے والی تکلیف میں افاقہ ہوتا ہے۔
دو کھجور کا گودا،آدھا چمچ ملیٹھی پاؤڈر،آدھا چمچ قصوری میتھی،ڈیڑھ کپ پانی میں ڈال کر خوب جوش دے کر صبح،دوپہر اور شام پینا مفید ہے۔
پیاز کا رس 200 گرام،شہد 200 گرام،سوڈا بائی کارب(کھانے والا)60 گرام،تینوں کو ملا کر صبح و شام ایک ایک چمچ استعمال کرنا مفید ہے۔
شہد دودھ یا پانی میں شامل کرکے پیا جا سکتا ہے۔یہ جمع شدہ بلغم کو تحلیل کرکے سانس کی نالیوں سے خارج کرنے میں مفید ہے۔
تاریخ اشاعت: 2021-03-15

Your Thoughts and Comments