Kya Aqal Darh Ka Talluq Aqal Se Hai?

کیا عقل داڑھ کا تعلق عقل سے ہے؟۔۔۔تحریر:عائشہ ظفر

Kya Aqal Darh Ka Talluq Aqal Se Hai?
ایک بہت عام اور سادہ سی بات ہے جوہم اپنی روزمرہ کی زند گی میں سنتے ہیں کہ کیاآپکو عقل آچکی ہے؟کیاعقلمند ہونے کیلئے عقل داڑھ کا آناضروری ہے؟اگرعقل کیلئے عقل داڑھ آناشرط ہے توپھرمیرامانناہے کہ دنیاکی سترفی صد عورتیں عقل اورعقل داڑھ سے محروم ہیں اور خواتین کے لیے یہ بات ماننا ناقابل قبول ساہے۔یہاں سوال یہ ہے کہ کیایہ کہاوت سچ ہے کہ عقل داڑھ کے ساتھ عقل بھی آتی ہے کیا؟ اوریہ دانت دیرسے کیوں نکلتاہے؟ عقل داڑھ کاتعلق عقل سے نہیں ہے اوراس کے دیرسے آنے کی وجہ یہ ہے کہ جب انسان سترہ سے پچیس سال تک کی عمرکافاصلہ طے کرتاہے توتب انسان عقل کے مراحل طے کررہاہوتاہے توعمومااس عمر میں عقل داڑھ کا آغاز ہوتاہے۔

اس وجہ سے اس داڑھ کوعقل داڑھ کانام دیاگیاہے کیونکہ یہ جوانی میں نکلتی ہے۔

(جاری ہے)

جن کوعقل داڑنہیں نکلتی اسکا مطلب یہ نہیں ہوتاکہ ان میں عقل نہیں ہے۔دنیاکے35فی صدافرادمیں عقل داڑھ نہیں نکلتی۔ عقل داڑھ کیاہے؟ یہ ہمارے جبڑے میں سب سے آخری دانت ہوتاہے۔یہ اوپر کے جبڑے میں دواور نیچے کے جبڑے میں دو دانت رہتے ہیں اور عقل داڑھ 17 سے 25 سال کی عمر میں نکلتی ہے۔

دردکی شدت: جب ہمارے جبڑے میں جگہ نہیں ہوتی تودانت کونکلنے میں کافی مشکل ہوتی ہے اور دانت ہڈی میں پھنس جاتاہے جس کی وجہ سے درد کی شدت بڑھ جاتی ہے۔دانت اورکان کے درد کے بارے میں کہاجاتاہے کہ یہ کسی دشمن کو بھی نہ ہوکیونکہ اسکی درد بہت شدیدہوتی ہے۔ عقل داڑھ سردرد کیوجہ: جب عقل داڑھ نکلتی ہے تو ہمارے جبڑے کو لپیٹ میں لے لیتی ہے دانت جبڑے کے ساتھ جڑاہوتاہے جس وجہ سے سر میں بھی درد ہوتاہے۔

کان کا درد: عقل داڑھ کان کے درد کابھی سبب بنتی ہے۔کیونکہ جبڑے کے آس پاس کے دانت اس دانت کوبڑھنے سے روک دیتے ہیں جس وجہ س سے درد پھیل جاتاہے۔ کیاعقل دارھ نکلوانابہترہے؟ ہمارے جسم میں جس طرح اپنڈکس کاکوئی کردار نہیں ہے اسی طرح عقل داڑھ کو بھی خاص اہمیت حاصل نہیں ہے۔پہلے وقتوں میں جب آگ کی دریافت نہیں ہوئی تھی لوگ سخت غذاکااستعمال کرتے تھے توعقل داڑھ جوکہ ہڈی میں مضبوطی سے جڑی ہوتی ہے تواسکی مددسے غذاکھاتے تھے۔

آگ کی دریافت کے بعدلوگ نرم غذاکے عاادی ہوگئے جس وجہ سے عقل داڑھ کی تکلیف سہنے کی بجائے نکلوانابہترسمجھتے ہیں۔اسکے علاوہ وہ عقل داڑھ جو ٹیٹرھی نکل رہی ہو اسے نکلوادینے میں ہی بھلائی ہے۔ عقل داڑھ کاعلاج: عقل داڑھ جسے آخری دانت اورتھرڈمولر بھی کہاجاتاہے اسکی دردشدیدہوتی ہے،اگرعقل داڑھ ہمارے جبڑے میں ٹیٹرھی نکل رہی ہو تو اسکو نکلوا دینا چاہیے۔

پین کلراس درد کامستقل علاج نہیں ہے۔ ڈاکٹرشاہ رخ لودھی کاکہناہے کے عقل داڑھ کادرد اگر شدت اختیار کررہاہو تواس کو نکلوا دیناچاہیے اسکے لیے سرجری کی جاتی ہے۔اورہلکی بیہوشی کی دوادی جاتی ہے اور اس دانت کو نکالاجاتاہے۔ اُنکا مزید عقل داڑھ کے بارے میں کہنا ہے کہ اس دانت کونکلوانااس لیے ضروری ہے کیونکہ دانتوں کے درمیان خلاکم ہونے کی وجہ سے یہ دوسرے دانتوں کو بھی خراب کرتاہے۔

اور جس وجہ سے جبڑوں میں بہت درد ہوتاہے اس وجہ سے مریض کودانت نکلوانے کا مشورہ دیاجاتاہے۔اگرمیری طرح خدانحواستہ آپ بھی اس درد میں مبتلا ہیں توجلداس دانت کو نکلوانابہتر سمجھیں۔آج کے مصروف دور میں آپ گھربیٹھے عقل کے استعمال سے ڈاکٹر سے رابطہ کرسکتے ہیں اس کیلئے بہت سی ویب سائٹس موجود ہیں جن کو آپ گوگل پرسرچ کرسکتے ہیں۔
تاریخ اشاعت: 2019-08-06

Your Thoughts and Comments