بند کریں
صحت مضامینمضامین

مضامین

اختلاج قلب یا دل کی دھڑکن

اگر دل زور زور سے دھڑک رہا ہو تو ہر بار اسے بیماری کی علامت بھی قرار نہیں دیا جاسکتادل کی دھڑکن بے ضرر توجہ طلب یا خطرناک ہوسکتی ہے

لولگنا:

ایک صحت مند آدمی عموماً120 ڈگری فارن ہائیٹ کا درجہ حرارت کئی گھنٹے تک برداشت کرلیتا ہے ہمارا جسم پسینہ خارج کرکے گرمی کا مقابلہ کرتا ہے پسینہ سوکھنے سے ٹھنڈک پیدا ہوتی ہے

رگیں پھولنا

عورتیں شاذ و ناذر ہی اس بیماری کا شکار ہوتی ہے بعض اوقات ادھیڑ عمر حتیٰ کہ نوجوان مردوں کی رگیں بھی پھول جاتی ہے خصوصاً کچھ دیر کھڑئے رہنے سے ان کی سوجن بڑھ جاتی ہے اس کی وجہ عموماً دائمی قبض ننگ گارٹر والی جرابیں یا دستانے پہننا یا جگر کی کوئی بیماری نہیں ہوتی ہے

تھکاوٹ

یاد رکھیے آپ کی تھکن نفسیاتی عمل کی ہوتی ہے اگر آپ کا ذہن تھکن کو تسلیم کرنے سے انکار کردے تو آپ کا جسم معمولی سے پانچ چھ گنا زیادہ دیر تک کام کرسکتا ہے

زیادہ پسینہ آنا

پاﺅں کا پسینہ نہ صرف بور کرتا ہے بلکہ گیلے پاﺅں جراثیم کی نشوو نما کے لیے بہترین ماحول فراہم کرتے ہیں بغل کا پسینہ اچھے بھلے کپڑے بہت جلد خراب کردیتا ہے

ہاتھ پاﺅں شل ہونا

سائیکل کے کیرئیر یا فریم پر بیٹھنے یا کرسی کی پشت سے ہاتھ نیچے لٹکانے سے ٹانگوں یا بازﺅں کا سوجانا قدرتی امر ہے

متفرق بیماریاں

سانس ناک کے ذریعے داخل ہونے والے مادے الرجی کی صورت میں زکام یا دمہ کا سبب بنتے ہیں بعض اوقات نظام تنفس کی الرجی جراثیم کی ہلاکت کے باعث بھی ہوتے ہیں آدھے سر کا درد بھی ایک قسم کی الرجی ہے

ملیریا

اگر دوران حمل ملیریا ہو جائے تو کونین ہرگز نہ استعمال کریں اس سے اسقاط حمل کا خطرہ ہوتا ہے اس کی بجائے آپ ملیریا کے موسم میں ڈاراپرمDaraprim کی ایک گولی ہر ہفتے کھاتی رہیں

دل کی بیماریاں

چوتھے اور آٹھویں مہینے کے دوران دل پر کام کا بوجھ ڈیڑھ گنا بڑھ جاتا ہے کیونکہ اس نے بچے کو بھی خون مہیا کرنا ہوتا ہے کمزور یا انیمیا کا شکار ہونے والی خواتین کے لیے یہ بوجھ خطرناک ثابت ہوسکتا ہے

خون کی کمی۔انیمیا

صحت مند حاملہ خواتین کمزور خواتین کی نسبت انیمیا کا کم شکار ہوتی ہے لیکن صحت مند خواتین میں بھی خون کی مقدار ضرورت کے لحاظ سے 25 فیصد کم ہوجاتی ہے انیمیا کے باعث رنگ پھیکا پڑجاتا ہے مریضہ بہت جلد تھک جاتی ہے

قے آنا

دو پہر کے کھانے کے بعد قے آنا یا دن میں کئی مرتبہ قے آنا یا چوتھے اور نویں مہینے کے درمیان بھی قے آتے رہنا غیر فطری عمل ہیں

ایام حمل کی بیماریاں

حاملہ عورت کی آنکھ جی متلانے کی وجہ سے کھلتی ہے اور چلنے پھرنے اور کام کرنے سے جی اور زیادہ متلانے لگتاہے اکثر اوقات ناشتے کے فوراً بعد قے آجاتی ہے یہ حالت ایک دو گھنٹے تک رہتی ہے
فہرست 109 سے 120  تک   (445 ریکارڈز )