بند کریں
صحت صحت کی خبریںابھی تک سوائن فلو کی ویکسین مارکیٹ میں نہیں آئی، آرڈر دے دیا ہے، وفاقی وزیر صحت

صحت خبریں

وقت اشاعت: 12/08/2009 - 21:17:13 وقت اشاعت: 12/08/2009 - 16:15:09 وقت اشاعت: 12/08/2009 - 15:57:47 وقت اشاعت: 10/08/2009 - 22:17:09 وقت اشاعت: 10/08/2009 - 21:44:14 وقت اشاعت: 10/08/2009 - 20:27:36 وقت اشاعت: 10/08/2009 - 15:51:26 وقت اشاعت: 09/08/2009 - 13:34:58 وقت اشاعت: 08/08/2009 - 19:35:12 وقت اشاعت: 08/08/2009 - 14:31:08 وقت اشاعت: 03/08/2009 - 18:10:29

ابھی تک سوائن فلو کی ویکسین مارکیٹ میں نہیں آئی، آرڈر دے دیا ہے، وفاقی وزیر صحت

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔10اگست۔2009ء) وفاقی وزیر صحت میر اعجاز حسین جھکرانی نے قومی اسمبلی کو بتایا ہے کہ ابھی تک سوائن فلو کی ویکسین مارکیٹ میں نہیں آئی مگر ہم نے اس کیلئے آرڈر دے دیا ہے۔ سوائن فلو کے کسی بھی مریض کے علاج کیلئے سرکاری ہسپتالوں میں ٹائمی فلو نامی ٹیبلٹ اینٹی وائرس ڈرک کافی مقدار میں موجودہے اور عملے کو ہیلتھ کیئر کی تربیت بھی دی گئی ہے پیر کو وقفہ سوالاتکے دوران عبد القادر پٹیل کے سوال کے کے جواب میں وزیر صحت نے بتایا کہ بین الاقوامی ہوائی اڈوں سمندری بندرگاہوں اور سرحدی چوکیوں پر مشتبہ مسافروں کی جانچ کیلئے ہیلتھ آفیسر موجود ہیں وزارت صحت سوائن فلو کے مریضوں کا پتہ چلانے کیلئے داخلی مقامات پر تھرمل سکینر نصب کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے ۔

انہوں نے بتایا کہ وزارت صحت نے تمام تعلیمی اداروں کے سربراہوں کو ہدایات جاری کی ہیں کہ وہ والدین کو سرکلر جاری کریں کہ وہ فلو کی علامات میں مبتلابچوں کو سکول نہ بھیجیں ۔ عبد القادر پٹیل کے سوال کے جواب میں وزیر ریلوے حاجی غلام احمد بلور نے ایوان کو بتایا کہ ای سی او ڈیماسٹریشن کنٹینر ٹرین 14 اگست کو اسلام آباد سے استنبول براستہ تہران شروع کی جائے گی اگر ایک مرتبہ تجارتی مال کی ٹرین مضبوط بنیادوں پر قائم ہوگئی تو اس کے بعد مسافر ٹرین سروس شروع ہو گی محترمہ نثار تنویر کے سوال کے جواب میں پارلیمانی سیکرٹری ظل ہما نے ایوان کو بتایا کہ جینڈر ریفارم ایکشن پلان کے تحت ادارتی اصلاحات ، سرکاری شعبہ میں خواتین کی ملازمت بڑھانے اور بہتر بنانے خواتین کی سیاسی شرکت کو بہتر بنانے پالیسیوں ، بجٹ سازی اور سرکاری اخراجات کے طریقہ کار میں اصلاحات کی جا رہی ہیں۔

محترمہ ثریا اصغر کے سوال کے جواب میں وفاقی وزیر نذر محمد گوندل نے بتایا کہ پاکستان میں پوست کی کاشت کنٹرول میں ہے اور ہم مضر سطح کے قریب ہیں انہوں نے بتایا کہ سال 2008 اور 2009 ء کے دوران صوبہ سرحد کی ایجنسیوں میں امن و امان کی صورتحال کے باعث پوست تلف نہیں کی جا سکی محترمہ شیریں ارشد خان کے سوال کے جواب میں وزیر صحت نے بتایا کہ وزارت نے عطائی طریقہکار پر قابو پانے کیلئے قانون سازی تجویز کی ہے اور پی ایم ڈی سی کو اس ضمن میں کارروائی کیلئے کہا ہے اس حوالے سے ایک اعلیٰ سطح کی کمیٹی قائم کر دی گئی ہے۔
10/08/2009 - 20:27:36 :وقت اشاعت