بند کریں
صحت صحت کی خبریںرات کو کسی سے ناراض ہو کر یا غصے میں نہ سوئیں،
بیمار ہوجائیں گے
دماغ کی ساخت ایسی ہے کہ اس ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 16/11/2017 - 13:05:47 وقت اشاعت: 16/11/2017 - 12:19:27 وقت اشاعت: 16/11/2017 - 11:34:53 وقت اشاعت: 16/11/2017 - 11:34:53 وقت اشاعت: 15/11/2017 - 16:49:55 وقت اشاعت: 15/11/2017 - 15:41:19 وقت اشاعت: 15/11/2017 - 15:14:30 وقت اشاعت: 15/11/2017 - 14:53:13 وقت اشاعت: 15/11/2017 - 12:17:11 وقت اشاعت: 15/11/2017 - 12:17:03 وقت اشاعت: 15/11/2017 - 12:17:03

رات کو کسی سے ناراض ہو کر یا غصے میں نہ سوئیں،

بیمار ہوجائیں گے , دماغ کی ساخت ایسی ہے کہ اس میں ایسی چیزیں زیادہ محفوظ رہ جاتی ہیں جو ناراضی یا پھر غصے کا سبب بنتی ہیں ،ْرپورٹ

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 نومبر2017ء)ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ رات کو سونے سے پہلے غصہ کرنا چاہئے اور نہ ہی کسی سے ناراض ہو کر سونا چاہئے کیونکہ ناراضی اور غصے کی وجوہات کو ذہن میں رکھ کر سونے کے نتیجے میں منفی سوچ کو تقویت ملتی ہے جس سے انسان کی صحت پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں۔سائنس میگزین میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق ماہرین کے مطابق دماغ کی ساخت ایسی ہے کہ اس میں ایسی چیزیں زیادہ محفوظ رہ جاتی ہیں جو ناراضی یا پھر غصے کا سبب بنتی ہیں ،ْ اس صورتحال کی وجہ سے انسان کے مختلف رشتوں کو نقصان ہو سکتا ہے۔

گزشتہ تحقیق سے معلوم ہوا تھا کہ جذبات آواز اور دماغ سے جڑے دیگر محرکات انسانوں کو ان احساسات کو یاد کرنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں ،ْامریکہ کے شہر بوسٹن میں قائم بیتھ اسرائیل ڈیکننیس میڈیکل سینٹر کے محققین نے اس سلسلے میں 57 مختلف افراد پر تحقیق کی۔تحقیق میں ہر شخص کو ایک آنکھ سے اچھا جبکہ دوسری آنکھ سے ناخوشگوار فوٹو دیکھنے کیلئے کہا گیاچونکہ ہر آنکھ دماغ کے دو مختلف حصوں سے جڑی ہوتی ہے اسلئے دماغ ہر فوٹو کو الگ الگ پراسیس کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

تصاویر دیکھنے کے بعد ایسی فوٹوز جن کی وجہ سے منفی جذبات پیدا ہوتے تھے ان کی وجہ سے دماغ میں مخصوص برقی سرگرمی ریکارڈ کی گئی۔ ان رضا کاروں کی آدھی تعداد سے 12 گھنٹوں بعد یہ معلوم کیا گیا کہ وہ یاد کرکے بتائیں کہ انہوں نے کون کون سی فوٹوز دیکھی تھیں جبکہ باقی رضاکاروں کی تعداد کو اس عرصہ کے دوران نیند لینے کیلئے کہا گیا جن رضاکاروں نے نیند لی انہیں 12 گھنٹوں کے بعد بھی منفی یا پھر نا خوشگوار فوٹوز یاد رہ گئیں جبکہ دیگر افراد نے ایسی تصاویر کو زیادہ یاد رکھا جو نیوٹرل یا پھر مثبت تھیں۔تحقیق کرنے والی ٹیم کے رکن رائے کوکس کا کہنا تھا کہ تحقیق سے معلوم کرنے میں مدد ملے گی کہ نیند کس طرح جذباتی نوعیت کی یادداشتوں کو مستحکم بناتی ہے۔
15/11/2017 - 15:41:19 :وقت اشاعت