پولیو مہم میں رکاوٹ ڈالنے والوں کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائے جائے گی،کمشنر مردان

پشاور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 17 اپریل2019ء)کمشنر مردان ڈویژن مطہر زیب خان نے کہا ہے کہ مردان ڈویژن میں پولیو وائرس مرض میں کافی حد تک کمی واقع ہوئی ہے اور ضلعی انتظامیہ کی بھر پور کوششوں کی وجہ سے یہ موذی مرض خاتمے کے قریب ہے ۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے اپنے دفتر میں ڈویژنل ٹاسک فورس کمیٹی برائے انسداد پولیو کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔

اجلاس میں ڈپٹی کمشنر مردان محمد عابد خان وزیر ، ڈپٹی کمشنر صوابی سلمان لودھی ، ڈی ایچ اوز مردان، صوابی کے نمائندوں اور محکموں کے افسران نے شرکت کی ، اجلاس میں 22 اپریل سے شروع ہونے والی چار روزہ پولیو مہم سے متعلق معاملات پر گفتگو کی گئی۔ مہم کے دوران 417754، صوابی میں 283661 کل 701415 ٹارگٹڈ بچوں کے لئے مردان میں 1315 اور صوابی میں 939 موبائل ٹیمیں تشکیل دیدی گئی ہیں ۔

(جاری ہے)

یہ موبائل ٹیمیں اس مہم کے دوران گھر گھر جا کر 5سال سے کم عمر کے بچوں کو پولیو کے قطرے پلائیں گی۔ کمشنر مردان نے متعلقہ محکموں کے افسران کو سختی سے ہدایت کی کہ ڈویژن اور خصوصاًضلع مردان میں انکاری والدین کے بہت سے کیسز سامنے آرہے ہیں اس سلسلے میں علمائے کرام ، بلدیاتی نمائندگان، پٹواری اور سکول اساتذہ کرام کی خدمات حاصل کریں تاکہ انکارکی تعداد کو کم کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ اس مہم میں رکاوٹ ڈالنے والوں کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائے جائے گی۔

Your Thoughts and Comments