خیرپور ، خسرے کی بیماری نے درجنوں گھر اجاڑدئیے ، 24گھنٹوں میں 7بچوں اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے، 100سے زائد اسپتال میں زیر علاج ،نارا کے ریگستانی علاقوں میں محکمہ صحت کی ٹیمیں نہ پہنچ سکیں، سینکڑوں بچے خسرے کی ویکسین سے محروم

خیرپور (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔آئی این پی۔10جنوری۔2013ء)خیرپور میں خسرے کی بیماری نے درجنوں گھر اجاڑدئیے ۔24گھنٹے کے دوران 7بچوں اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے ۔100سے زائد بچے اسپتال میں زیر علاج ۔نارا کے ریگستانی علائقے میں محکمہ صحت کی ٹیمیں نہ پہنچ سکیں ۔سینکڑوں بچے خسرے کی ویکسین سے محروم ۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق خیرپور میں خسرے کی وبائی بیماری نے مزید 7گھر آجاڑدئیے پیر جو گوٹھ میں 3پریالو میں 4 بچے جان بحق ہوگئے پیر جوگوٹھ میں 7سالہ تہمینہ ،4سالہ شہناز ،6سالہ نواب خان ،جبکہ پریالو میں اسد پٹھان ،مدثر شیخ ، آسیہ ،5سالہ گاجھی خان لاشاری خسرے کی بیماری کے باعث جان بحق ہوگئے جبکہ سٹی اسپتال خیرپور اور مختلف اسپتالوں میں ایک سو سے زائد بچے زیر اعلاج ہیں جہاں پر بھی مریضوں کو ادویات نہ ملنے کے باعث پریشانی کا سامنا ہے جبکہ نارا کے علائقے میں محکمہ صحت کی ٹیمیں نہیں پہنچ سکیں ہیں جبکہ وزیر اعلیٰ سندھ کی انسپیکشن ٹیم بھی خیرپور ضلع میں موجود ہے جو ڈاکٹر وں سے معلومات لے رہی ہیں اور اسپتالوں میں ادویات کی شکایات پر عمل کر رہی ہیں جبکہ ای ڈی او خیرپور احسان سیال کے مطابق خیرپور میں دو ماہ کے دوران 40بچے خسرے سے جاں بحق ہوچکے ہیں ۔

Your Thoughts and Comments