پاکستان میں ہرسال 40ہزار بچے پیدائشی طور پر دل کے امراض کے ساتھ پیدا ہو رہے ہیں ،پیدائش سے ایک ماہ کے اندر اندر آپریشن ضروری ہے، امراض قلب فیصل آباد کے ادارہ میں دل کے امراض میں مبتلا بچوں کے آپریشن کا سلسلہ شروع کر دیا گیا،میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ایف آئی سی

فیصل آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 19 فروری2020ء) پاکستان میں ہرسال 40ہزار بچے پیدائشی طور پر دل کے امراض کے ساتھ پیدا ہو رہے ہیں جن کاپیدائش سے ایک ماہ کے اندر اندر آپریشن ضروری ہے جبکہ امراض قلب فیصل آباد کے ادارہ میں دل کے امراض میں مبتلامذکورہ بچوں کے آپریشن کا سلسلہ شروع کر دیا گیا ہے ۔

(جاری ہے)

فیصل آباد انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر ظفر عباس خان بلوچ نے اے پی پی سے بات چیت کے دوران بتایا کہ پاکستان میں ہر سال 40ہزار بچے دل کے امراض کے ساتھ پیدا ہوتے ہیں جن کا پیدائش سے ایک ماہ کے اندر آپریشن ہونا ضروری ہے ۔

انہوںنے بتایاکہ فیصل آباد میں اینجیو گرافی و اینجیو پلاسٹی کے ذریعے دل کی شریانیں اور بند والو کھولنے کیلئے ایف آئی سی میں خصوصی شعبہ قائم کردیاگیاہے جس سے اب بچوں کو یہیں پر علاج معالجہ کی سہولت حاصل ہو سکے گی۔انہوںنے بتایاکہ سالانہ دس ہزار بچوں کو آؤٹ ڈور میں علاج معالجہ کی سہولت دی جا رہی ہے اور اب یہاں پر دوبارہ سے بچوں کے دل کے آپریشن شروع کر دئیے گئے ہیں ۔انہوںنے بتایاکہ فیصل آباد میں دل کے امراض میں مبتلا بچوں کو علاج معالجہ کے ساتھ آپریشن کی سہولت دی جا رہی ہے جس میں مرحلہ وار توسیع کی جائے گی۔

Your Thoughts and Comments