بند کریں
صحت صحت کی خبریںخیبر پختونخواہ حکومت کی جانب سے تعلیم اور صحت میں ایمرجنسی نافذ کرنے کے ااعلان سے کرپٹ افسران ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 18/06/2013 - 22:21:51 وقت اشاعت: 18/06/2013 - 20:49:37 وقت اشاعت: 18/06/2013 - 16:11:01 وقت اشاعت: 18/06/2013 - 14:01:53 وقت اشاعت: 17/06/2013 - 20:47:37 وقت اشاعت: 17/06/2013 - 20:44:19 وقت اشاعت: 17/06/2013 - 19:44:35 وقت اشاعت: 17/06/2013 - 17:16:42 وقت اشاعت: 17/06/2013 - 13:36:39 وقت اشاعت: 16/06/2013 - 21:26:32 وقت اشاعت: 16/06/2013 - 20:58:24

خیبر پختونخواہ حکومت کی جانب سے تعلیم اور صحت میں ایمرجنسی نافذ کرنے کے ااعلان سے کرپٹ افسران ، ڈیوٹی سے غائب اساتذہ میں کھلبلی

کمیلہ کوہستان(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔آئی این پی۔17جون۔ 2013ء) خیبر پختونخواہ کی حکومت کی جانب سے تعلیم اور صحت میں ایمرجنسی نافذ کرنے سے کرپٹ افسران اور ڈیوٹی سے غائب اساتذہ سمیت بھوت سکولوں کے مالکان میں کھلبلی مچ گئی ، ایمرجنسی پر عمل کرنے سے سب سے زیادہ فائدہ ضلع کوہستان کو ہوگا۔ اس وقت ضلع کوہستان میں تعلیم اور صحت کا فقدان سب سے زیادہ ہے ، خصوصا خواتین کی تعلیم نہ ہونے کے برابرہیں اور سرکاری سکولوں میں حکومت کی عدم توجہی کی باعث نہ تو سہولیات ہیں اور نہ نظام صحیح طریقے سے چل رہاہے ، یہی وجہ ہے کہ ضلع کوہستان کی غریب عوام ہزاروں روپے پرئیوٹ سکولوں کی فیس کی مد میں یکر اپنے بچوں سے تعلیم حاصل کرواتے ہیں اور غریب کا بچہ بھیڑ بکریا اور معاشرتی بے راہ وروی کا شکارہوجاتاہے ۔

ضلع کوہستان کے مکینوں کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے ایمرجنسی کا نفاظ محض باتوں کی حد تک ہوا تو فائد کچھ نہیں ہوگا، ضرورت اس امر کی ہے کہ کوہستان میں موجود تمام سکولوں کو فعال بنایا جائے تاکہ یہاں کے پسماندہ اور غریب عوام کے بچوں کو مفت تعلیم مل سکے ۔ علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ صوبائی حکومت کی جانب سے صحت اور تعلیم میں ایمرجنسی نافذ کرنا اور بجٹ میں خطیر رقم مختص کرنا نیک شکون ہے ، ضرورت اس امر کی ہے کہ ضلع بھرکے دفاتر میں سے سابق سالہاسال قابض رہنے والے کرپٹ افسران کو ہٹاکر ایماندار افسران کو تعینات کیا جائے اور نئے سرے سے تعلیمی سروے کرکے تمام سکولوں کو فعال کیا جائے ۔

اس کے ساتھ ساتھ ضلع بھر میں موجود بی ایچ یوز سمیت ہسپتالوں میں ادویات پر کڑی نظر رکھی جائے اور ڈاکٹرز کو ڈیوٹی انجام دینے پر مجبو رکیا جائے تاکہ غریب عوام کو سہولیات ان کی دہلیز پر مل سکیں ۔ ہسپتالوں میں ڈاکٹروں کی کمی کو پورا کیاجائے اور کرپٹ لوگوں کو محکمہ سے نکال دیاجائے ۔ اس سارے عمل کیلئے غیر جانبدار اور اچھی شہرت کے حامل کرپشن سے پاک لوگوں کی ایک کمیٹی بنائی جائے تو ہفتہ وار صوبائی حکومت کو تعلیم اور صحت کی پروگریسیو رپورٹ ارسال کرے ۔ تحریک انصاف کی حکومت کیلئے خصوصا ضلع کوہستان ایک ٹسٹ کیس ہے ، اگر اندھیر نگری اور کرپشن کا یہ سلسلہ اس دور حکومت میں بھی جاری رہاتو عوام کا خدا ہی حافظ ہے ۔
17/06/2013 - 20:44:19 :وقت اشاعت