سندھ میں کورونا کے پھیلا کی شرح ملک بھر میں سب سے زیادہ ، حکام نے خطرے کی گھنٹی بجادی

کراچی میں کورونا کیسزکی شرح ساڑھے 11فیصد اور حیدرآبادمیں ساڑھے 11فیصد سے زائدہوگئی

سندھ میں کورونا کے پھیلا کی شرح ملک بھر میں سب سے زیادہ ، حکام نے خطرے ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 08 مئی2021ء) محکمہ صحت کے حکام نے خطرے کی گھنٹی بجا دی اور کہا کراچی،حیدر آبادمیں کوروناکیسزکی تعداد خطرناک حد تک بڑھنے لگی ہے اور کراچی میں کورونا کیسزکی شرح ساڑھے 11فیصد اور حیدرآبادمیں ساڑھے 11فیصد سے زائدہوگئی۔تفصیلات کے مطابق محکمہ صحت کی جانب سے بیان میں کہا گیا ہے کہ سندھ میں کوروناکے پھیلاؤکی شرح ملک بھرمیں سب سے زیادہ ہوگئی اور کراچی،حیدر آبادمیں کوروناکیسزکی تعداد خطرناک حد تک بڑھنے لگی ہے۔

این سی او سی کے مطابق کراچی میں کورونا کیسزکی شرح ساڑھے 11فیصد اور حیدرآبادمیں بھی شرح ساڑھے 11فیصد سے زائدہوگئی جبکہ پنجاب اور خیبرپختونخوا میں کورونا کیسز میں کمی آنا شروع ہوئی ہے۔محکمہ صحت حکام کا کہنا ہے کہ سندھ خصوصا کراچی میں کورونامریضوں کی اسپتالوں میں داخلے کی شرح بڑھنا شروع ہوگئی ہے ، سندھ میں اس وقت 650 سے زائد کورونامریض اسپتالوں میں زیرعلاج ہیں ، جس میں سے 616 مریض ہائی فلو آکسیجن پر ہیں۔

(جاری ہے)

حکام کے مطابق اسپتالوں میں موجودہائی فلوآکسیجن پرمریضوں کی حالت تشویشناک ہے، سندھ کیاسپتالوں میں اسوقت 54 کورونامریض وینٹی لیٹرز پر ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ایس اوپیزپرعملدرآمدکیلئے سندھ حکومت کی عدم دلچسپی اضافہ کی وجہ قرار دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ این ای249 میں ضمنی الیکشن بھی کوروناکے پھیلاؤکا سبب بنا۔ذرائع کے مطابق جلوسوں،کاروباری سرگرمیوں میں ایس اوپیزپرعملدرآمدنہ ہونابھی وجہ قرار دیا گیا جبکہ ٹرینوں کی آمد و رفت بھی سندھ میں کورونا کے پھیلاؤکی وجہ ہے۔

Your Thoughts and Comments