ڈیلٹا ویرینٹ چکن پاکس کی طرح تیزی سے پھیلتا ہے،لیک دستاویزات میں انکشاف

ویکسینز شدید نوعیت کی بیماریوں سے تو 90 فیصد تک محفوظ رکھتی ہیں لیکن شاید یہ انفیکشنز اور ان کی منتقلی سے کم بچاتی ہیں،رپورٹ

واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 30 جولائی2021ء)امریکا کے سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پریوینشن (سی ڈی سی)کی لیک ہونے والی دستاویزات میں انکشاف ہوا ہے کہ بھارت سے سامنے آنے والی کورونا وائرس کی خطرناک قسم ڈیلٹا چکن پاکس کی طرح تیزی سے پھیلتی ہے اور اس سے ویکسی نیشن کروانے والے افراد بھی متاثر ہوتے ہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق سی ڈی سی کی لیک دستاویزات میں انکشاف ہوا کہ ڈیلٹا ویرینٹ سے متاثر ہر مریض اوسطا 8 سے 9 افراد کو متاثر کرتا ہے اور یہ اس قدر تیزی سے پھیلتا ہے کہ جیسے چکن پاکس پھیلتا ہے۔

امریکی ادارے کی سلائیڈ کی شکل میں لیک دستاویزات میں اس بات کو بھی تسلیم کیا گیا ہے کہ وائرس کے خلاف جنگ کی نوعیت تبدیل ہو چکی ہے اور اس سے مقابلے کے لیے ویکسین لگوانے کے ساتھ ماسک پہننا بھی ضروری ہے۔

(جاری ہے)

دستاویزات کے ذریعے یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ ڈیلٹا ویرینٹ کورونا ویکسی نیشن کروانے والے افراد میں بھی اس قدر تیزی سے پھیلتا ہے جتنا تیزی سے ویکسی نیشن نا کروالے والے افراد میں پھیلتا ہے۔

تاہم لیک دستاویزات میں کہا گیا ہے کہ ویکسی نیشن کروانے والے افراد موت اور شدید نوعیت کی بیماریوں سے 10 گنا زیادہ محفوظ رہتے ہیں اور ان میں انفیکشن سے متاثر ہونے کے امکانات بھی تین فیصد کم ہو جاتے ہیں۔لیک ڈیٹا میں کہا گیا کہ ویکسینز شدید نوعیت کی بیماریوں سے تو 90 فیصد تک محفوظ رکھتی ہیں لیکن شاید یہ انفیکشنز اور ان کی منتقلی سے کم بچاتی ہیں۔

Your Thoughts and Comments