بند کریں
صحت صحت کی خبریںنوشہرہ، سیکورٹی عملے نے ہسپتال لیبارٹری انچارج کو ہیپاٹائٹس کے سٹریپ کی بھاری مقدار چوری ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 08/09/2014 - 12:52:06 وقت اشاعت: 08/09/2014 - 12:40:58 وقت اشاعت: 07/09/2014 - 16:59:43 وقت اشاعت: 07/09/2014 - 16:31:09 وقت اشاعت: 07/09/2014 - 14:58:12 وقت اشاعت: 06/09/2014 - 21:53:05 وقت اشاعت: 06/09/2014 - 21:23:24 وقت اشاعت: 06/09/2014 - 19:23:05 وقت اشاعت: 06/09/2014 - 18:52:17 وقت اشاعت: 06/09/2014 - 17:30:58 وقت اشاعت: 06/09/2014 - 16:57:05

نوشہرہ، سیکورٹی عملے نے ہسپتال لیبارٹری انچارج کو ہیپاٹائٹس کے سٹریپ کی بھاری مقدار چوری کرنے کی کوشش پر رنگے ہاتھوں گرفتار کر لیا، پولیس کے حوالے

نوشہرہ(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔6ستمبر 2014ء ) ڈی ایچ کیو ہسپتال نوشہرہ کے سیکورٹی عملے نے ہسپتال لیبارٹری انچارج کو ہیپاٹائٹس (کالے یرقان )کے سٹریپ کی بھاری مقدارچوری کرکے ہسپتال سے گھر منتقل کرنے کی کوشش کرتے ہوئے رنگے ہاتھوں قابو کرکے پولیس کے حوالے کردیا ہسپتال کے ایم ایس نے لیبارٹری انچارج ناصر سے مک مکا کرکے کاروائی سے بچالیا جنرل ڈیوٹی پر تعینات ڈسپنسرناصر کو کو ملی بھگت سے لیبارٹری کا انچارج بنادیا جو کہ طویل عرصہ سے کالے یرقان کے زائد المیعاد د سٹریپ ہسپتال لیبارٹری میں مریضوں کے ٹیسٹ میں استعمال کرکے نئے سٹریپ چوری کرکے گھر لے جانے کا دھندہ کرتا ہے قبل ازیں بھی میڈیا کی ٹیموں اور مریضوں کے ورثاء نے پکڑکر ایم ایس کے حوالے کیاتھا لیکن ایم ایس نے پہلے بھی ان سے مک مکا کرکے بغیر کسی کاروائی کے چھوڑ دیاتھا لیبارٹری میں زائدالمیعاد سٹریپ کے استعمال کے باعث کالے یرقان کے مریض کا ٹسیٹ بھی نیگیٹیو دے دیاگیا جس کا بھانڈہ ہسپتال کے اپریشن تھیٹر میں مریض کے پیٹ میں پانی کی موجو!!دگی کے بعد مقامی لیبارٹری سے نئے ٹیسٹ میں کالے یرقان کی تصدیق آنے پر پھوٹ گیا جس کے باعث ہسپتال کے چند اوزار ضائع کئے گئے جبکہ ہسپتال کے OTمیں بدستور انستھیزیا مشین مریضوں میں کالا یرقان پھیلارہی ہے حکومتی حکام محکمہ صحت کے حکام نے صورتحال پر چپ سادھ رکھی ہے ڈسٹرکٹ ہسپتال نوشہرہ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خان خٹک کے آبائی ضلع کا ہسپتال ہے لیکن ہسپتال کے معاملات میں وزیراعلیٰ کی عدم دلچسپی کے باعث ہسپتال کے اوے کا اوا ہی بگڑا ہوا ہے ڈی ایچ کیو ہسپتال میں جنرل ڈیوٹی پر تعینات ناصر کو ایم ایس نے ملی بھگت سے لیبارٹری کا انچارج لگادیا ہے موصوف اس سے قبل بھی خیرآباد آر ایچ سی سے بدنامی کے باعث تبدیل ہوکر آر ایچ سی ڈاگ اسماعیل خیل میں تبادلہ ہواتھا لیکن ڈی ایچ کیو ہسپتال کے ایم ایس نے ملی بھگت سے لیبارٹری انچارج تعینات کیا ہے اور جنہوں نے کرپشن ، حرام خوری اور چوری کے ریکارڈتوڑ دئیے ہیں ہسپتال کے سیکورٹی عملے نے ہسپتال سے بھاری مقدار میں ہیپاٹائٹس سی، ہیپاٹائٹس بی کے سٹریپس چوری کرکے گھر لے جاتے ہوئے حراست میں لیکر کیجولٹی پولیس چوکی کے حوالے کردیا لیکن ہسپتال کے ایم ایس نے آکر معاملہ مک مکا کرکے رفع دفع کردیا ہسپتال عملے کے مطابق لیبارٹری انچارج ناصر وزیراعظم پروگرام کے ہیپاٹائٹس کے زائدالمیعاد سٹریپس جو کہ محکمہ صحت نے ضائع کرنے کے احکامات دے رکھے ہیں لیکن مذکورہ لیبارٹری انچارج نے ان کو ضائع کرنے کی بجائے اپنے پاس محفوظ رکھ کر طویل عرصہ سے مریضوں کے ٹیسٹ ان زائدالمیعاد سٹریپس سے کرتے ہیں اور محکمہ صحت کی جانب سے فراہم کردہ ہیپاٹائٹس کے نئے سٹریپس چوری کرکے اپنے گھر لے جاتا ہے اور خیرآباد میں اپنی نجی لیبارٹری جو کہ اپنے میٹرک فیل بھائی کے ذریعے چلارہا ہے کے حوالے کرکے استعمال کرتا ہے اور نئے سٹریپس مارکیٹ میں فروخت کرتا ہے زائد المیعاد سٹریپس استعمال ہونے کے باعث نوشہرہ لیبارٹری میں ٹیسٹوں کے لئے آنے والے مریض اپنے ساتھ ہیپاٹائٹس کا تحفہ لیکر موت کی وادی میں پہنچ جاتے ہیں اس صورتحال کے باعث عبدالرحمن نامی مریض جس کو ہیپاٹائٹس سی لاحق تھا اس مریض کو ڈی ایچ کیو ہسپتال نوشہرہ کے لیبارٹری سے زائدالمیعاد سٹریپس کے استعمال سے نیگیٹو ٹیسٹ بناکر اپریشن تھیٹر کو مریض بھیج دیا ہسپتال کی او ٹی میں اپریشن کے دوران مریض کے پیٹ میں پانی کی موجودگی پائی گئی جس کے باعث اپریشن کرنے والے ڈاکٹر اسلام نے مقامی لیبارٹری سے دوبارہ ٹیسٹ کرایا تو اس مریض کا ٹیسٹ پازیٹیو آنے پر اپریشن تھیٹر میں سرجن اور عملے کی دوڑیں لگ گئی ہسپتال کے ایم ایس نے لیبارٹری انچارج کے خلاف کسی قسم کی کاروائی نہیں کی اور دودن تک ڈی ایچ کیو ہسپتال نوشہرہ کا اپریشن تھیٹر بند رکھا گیا اور معمولی اوزار ضائع کردئیے گئے جبکہ ہسپتال عملے کے مطابق OTکا پورا کمرہ اور پانچ لاکھ کا انستھیزیامشین ہیپاٹائٹس کے مریض کو اپریشن میں استعمال ہونے کے باعث بدستور ہر اپریشن کرنے والے مریض میں کالا یرقان منتقل کررہا ہے اس سنگین اور ہنگامی صورتحال پر صوبائی وزیرصحت سیکرٹری ہیلتھ ڈی جی ہیلتھ ڈی ایچ او نوشہرہ نے مجرمانہ خاموشی اختیار کی ہوئی ہے اور وزیراعلیٰ کے آبائی ضلع کے ڈی ایچ کیو ہسپتال کا اپریشن تھیٹر اور لیبارٹری چور انچارج کے باعث تیزی کے ساتھ نوشہرہ میں کالا یرقان پھیلارہے ہیں لیکن کوئی بھی ایکشن لینے کو تیار نہیں اور سیاسی بنیادوں پر تعینات ایم ایس ڈاکٹرا رشد کو بچانے کی کوشش ہورہی ہے جبکہ نوشہرہ کے عوام کو کالے یرقان سے بچانے کی کسی کو فکر نہیں ہے۔

06/09/2014 - 21:53:05 :وقت اشاعت