بند کریں
صحت صحت کی خبریںایبولا وائرس، لائبیریا کی صدر نے اوباما سے براہ راست مدد اپیل کر دی،امریکہ ایبولا وائرس کو ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 15/09/2014 - 14:34:51 وقت اشاعت: 15/09/2014 - 12:24:03 وقت اشاعت: 14/09/2014 - 18:45:15 وقت اشاعت: 14/09/2014 - 15:08:52 وقت اشاعت: 14/09/2014 - 14:50:09 وقت اشاعت: 14/09/2014 - 13:43:37 وقت اشاعت: 13/09/2014 - 22:56:33 وقت اشاعت: 13/09/2014 - 22:24:00 وقت اشاعت: 13/09/2014 - 21:50:28 وقت اشاعت: 13/09/2014 - 21:50:28 وقت اشاعت: 13/09/2014 - 19:36:28

ایبولا وائرس، لائبیریا کی صدر نے اوباما سے براہ راست مدد اپیل کر دی،امریکہ ایبولا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے ہنگامی مدد کرے ، واشنگٹن کی مدد کے بغیر اس وباء کے خلاف جاری جنگ ہار جائیں گے‘ صدر ایلن جانس سرلیف

لند ن(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔14ستمبر۔2014ء)لائبیریا کی صدر ایلن جانس سرلیف نے امریکا سے اپیل کر دی ہے کہ وہ ایبولا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے ہنگامی مدد کریں۔ انہوں نے کہا ہے کہ واشنگٹن کی مدد کے بغیر وہ اس وباء کے خلاف جاری جنگ ہار جائیں گے۔ بر طا نو ی خبر رساں ادارے نے بتایا ہے کہ افریقی ملک لائبیریا کی خاتون صدر ایلن جانسن سرلیف نے امریکی صدر باراک اوباما کو لکھے گئے ایک خط میں امداد کی براہ راست اپیل کی ہے۔

رواں برس مارچ کے مہینے میں مغربی افریقی ممالک سے پیدا ہونے والے اس وائرس کے نتیجے میں چوبیس سو افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں، جن میں سے زیادہ تر افراد لائبیریا اور اس کے ہمسایہ ممالک گینی اور سیرالیون میں ہی ہلاک ہوئے ہیں۔عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے بھی خبردار کیا ہے کہ لائبیریا میں یہ مہلک وائرس تیزی سے پھیل رہا ہے اور اس سے نمٹنے کے لیے خصوصی اقدامات ناگزیر ہیں۔

اس عالمی ادارے کے اعداد و شمار کے مطابق اس بیماری سے ہونے والی کل ہلاکتوں میں سے نصف اسی افریقی ملک میں ہوئی ہیں۔ ڈبلیو ایچ او کے مطابق آئندہ کچھ ہفتوں میں لائبیریا میں یہ وائرس مزید ہزاروں افراد کو اپنی لپیٹ میں لے سکتا ہے۔طبی امدادی ادارے ایم ایس ایف نے بھی متاثرہ ممالک میں متعدد سینٹرز قائم کیے ہوئے ہیں لیکن اس ادارے نے بھی کہہ دیا ہے کہ تیزی سے پھیلتا ہوا ایبولا وائرس قابو سے باہر ہوتا جا رہا ہے اور اس لیے اب عالمی سطح پر حکومتوں کو مدد کرنا چاہیے تاکہ اس کی شدت کو کم کرنے میں مدد مل سکے۔

خواتین کے حقوق پر کام کرنے کے باعث نوبل انعام کے حقدار قرار پانے والی لائبیریا کی صدر ایلن جانسن سرلیف نے لکھا ہے، ” (واشنگٹن) حکومت کی براہ راست مدد کے بغیر ہم ایبولا کے خلاف جاری جنگ ہار جائیں گے۔ صدر ایلن جانسن سرلیف نے امریکی صدر باراک اوباما کو لکھے گئے خط میں درخواست کی کہ امریکا لائبیریا کے دارالحکومت مونروویا میں کم از کم ایک ہیلتھ سینٹر ہنگامی بنیادوں پر قائم کرے، ”صرف آپ جیسی حکومتوں کے پاس ہی اتنے وسائل اور مہارتیں ہیں، جن کی بدولت اس وائرس کے خلاف موٴثر کوششیں کی جا سکتی ہیں۔“

14/09/2014 - 13:43:37 :وقت اشاعت