بند کریں
صحت صحت کی خبریں اپنے دور اقتدار میں صوبے میں صحت کے شعبے پر خصوصی توجہ رہی ،امیرحیدر ہوتی

صحت خبریں

وقت اشاعت: 02/11/2014 - 12:01:48 وقت اشاعت: 01/11/2014 - 23:06:58 وقت اشاعت: 01/11/2014 - 22:48:58 وقت اشاعت: 01/11/2014 - 22:33:34 وقت اشاعت: 01/11/2014 - 22:33:34 وقت اشاعت: 01/11/2014 - 21:30:57 وقت اشاعت: 01/11/2014 - 21:14:57 وقت اشاعت: 01/11/2014 - 20:42:32 وقت اشاعت: 01/11/2014 - 20:21:16 وقت اشاعت: 01/11/2014 - 19:22:14 وقت اشاعت: 01/11/2014 - 18:49:35

اپنے دور اقتدار میں صوبے میں صحت کے شعبے پر خصوصی توجہ رہی ،امیرحیدر ہوتی

مردان (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔یکم نومبر 2014ء)سابق وزیراعلیٰ اور اے این پی کے صوبائی صدرامیرحیدرخان ہوتی نے کہاہے کہ اپنے دور اقتدار میں صوبے میں صحت کے شعبے پر خصوصی توجہ رہی ،مردان ،چارسدہ اورپشاور میں بچوں کے جدید ترین ہسپتال کا قیام اس سلسلے کی کڑی تھی ،سیاست سے بالاتر ہوکر عمران خان کو کینسر ہسپتال کے لئے مفت اراضی کے ساتھ ساتھ پانچ کروڑ کاعطیہ دیا ،دکھی انسانیت کی خدمت کرنے والوں کے ہاتھ مضبوط کرنا ہماری مذہبی اور ملی ذمہ داریاں ہیں وہ کٹہ خٹ میں یو ایم ہیلتھ کئیر ٹرسٹ کے دورے کے موقع پر منعقد ہ تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کررہے تھے پارٹی کے ضلعی صدر حمایت اللہ مایار اورپروفیسر فرمان الدین نے بھی خطاب کیا تقریب میں اے این پی کے ضلعی نائب صدر عباس ثانی ،جنرل سیکرٹری لطیف الرحمان ،شاہ رخ امان خان ،منیر خان ،سہیل باچا ،اقبال حسین بابو کے علاوہ علاقے کے عمائدین کی بڑی تعداد شریک ہوئی ادارے کے منیجنگ ڈائریکٹر ممتازخان نے ہسپتال کے قیام اورکارکردگی کے حوالے سے رپورٹ پیش کی اوربتایاکہ ہسپتال کے قیام سے اب تک اپنی مدد آپ کے تحت دولاکھ دوہزار سے زائد مریضوں کو طبی امداد فراہم کی گئی ہے امیرحیدرخان ہوتی نے ہسپتال کے مختلف حصوں کا معائنہ کیاامیرحیدرخان ہوتی نے ہسپتال کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے کہاکہ دکھی انسانیت عین عبادت ہے اوربطور مسلمان ہم سب کا فرض ہے کہ ایسے اداروں اور افراد کی مدد کی جائے جو غریب شہریوں کو علاج ومعالجے کی سہولیات بہم پہنچارہے ہیں انہوں نے کہاکہ اے این پی کی منزل اقتدار اوراسمبلیوں کی سیٹوں کا حصول نہیں بلکہ اللہ کی رضا کے لئے اللہ کی مخلوق کی خدمت کرنا مقصود ہے۔

امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ ان کی حکومت نے صحت کے شعبے کی ترقی پر خصوصی توجہ دی مردان میں باچاخان میڈیکل کالج کے قیام سے بچوں کی اعلیٰ تعلیم کا مسئلہ حل کردیاگیاتو ایم ایم سی ہسپتال کو ٹیچنگ کا درجہ دے کر وہاں بنیادی سہولیات فراہم کیں امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ مردان میں صحت کی سہولیات کی خاطر ڈی ایچ کیو کو نئے سرے سے بنانے کی منطوری د ی گئی شہر میں 1122کی سروس کا آغازکردیاگیاانہوں نے کہاکہ مردان ،چارسدہ اور پشاور میں بچوں کے علاج ومعالجے کے جدید ترین ہسپتالوں کی منظوری دے دی گئی اوران منصوبوں پر تیزی سے کام جاری ہے انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت سے توقع ہے کہ وہ مزید شہروں ان جیسے ہسپتالوں کے قیام کی منظوری دے گی اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ باچاخان نے پختون قوم کو ہمیشہ تعلیم کے حصول پر زوردیا جس کا مقصد یہ تھاکہ پختون حالات اوردیگر اقوام سے پیچھے نہ رہیں انہوں نے کہاکہ یہ وقت پختون قوم کے باہمی اتحاداوراتفاق کاہے کیونکہ پوری دنیا میں پختون قوم مسائل اورمصائب کی شکارہے اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ باچاخان نے اس دھرتی اورپختون قوم کو مسائل سے نکالنے کے لئے جس تحریک کا آغازکیااے این پی اسی منزل کی حصول کے لئے کوشاں ہے۔

01/11/2014 - 21:30:57 :وقت اشاعت