بند کریں
صحت صحت کی خبریںبھارت میں ریاستی خاندانی منصوبہ بندی مہم کے دوران سرکاری طبی کیمپ میں آٹھ خواتین ہلاک

صحت خبریں

وقت اشاعت: 11/11/2014 - 20:45:52 وقت اشاعت: 11/11/2014 - 20:40:16 وقت اشاعت: 11/11/2014 - 20:37:26 وقت اشاعت: 11/11/2014 - 20:16:57 وقت اشاعت: 11/11/2014 - 20:11:19 وقت اشاعت: 11/11/2014 - 19:11:21 وقت اشاعت: 11/11/2014 - 19:09:15 وقت اشاعت: 11/11/2014 - 18:46:57 وقت اشاعت: 11/11/2014 - 18:33:01 وقت اشاعت: 11/11/2014 - 17:34:23 وقت اشاعت: 11/11/2014 - 17:34:23

بھارت میں ریاستی خاندانی منصوبہ بندی مہم کے دوران سرکاری طبی کیمپ میں آٹھ خواتین ہلاک

رائے پور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔11نومبر 2014ء)بھارت میں ریاستی خاندانی منصوبہ بندی مہم کے دوران سرکاری طبی کیمپ میں آٹھ خواتین ہلاک اور درجنوں ہسپتال پہنچ گئیں جن میں سے متعدد کی حالت نازک بتائی جارہی ہے۔یہ واقعہ ریاست چھتیس گڑھ میں پیش آیا اور ایک مقامی عہدیدار نے فرانسیسی خبررساں ادارے کو بتایاکہ 80 سے زائد خواتین جو مفت حکومتی کیمپ میں خاندانی منصوبہ بندی یا نس بندی کے لیے آئی تھیں، ان میں سے بیشتر بیمار ہوکر ہسپتال پہنچیں۔

سونمانی بورہ نامی اس عہدیدار نے بتایا کہ سرجری سے گزرنے والی ان خواتین کی حالت بگڑنے لگی، جس کے باعث اب تک آٹھ خواتین ہلاک اور 64 ہسپتالوں میں زیرعلاج ہیں۔ٹیلیویڑن فوٹیجز سے معلوم ہوتا ہے کہ خواتین کو اسٹریچرز پر ڈال کر ہسپتال پہنچایا جارہا ہے اور دہشت زدہ رشتے دار ان کے ہمراہ ہیں۔سونمانی کے مطابق انتظامیہ اس سانحے کی تحقیقات کررہی ہے۔

بھارت میں ریاستی حکومتیں اکثر بڑھتی آبادی پر قابو پانے کے لیے خاندانی منصوبہ بندی کرانے کے عوض لوگوں کو گاڑیاں اور الیکٹرونک مصنوعات جیسی اشیاء دینے کی پیشکش کرتے ہیں۔بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ چھتیس گڑھ میں ایک ڈاکٹرر اور اس کا معاون پانچ گھنٹے سے یہ سرجریاں کررہا تھا تاہم چیف میڈیکل آفیسر کے مطابق یہ کوئی غلفت نہیں،سرجری کرنے والا سنیئر ڈاکٹر تھا ہم اس واقعے کی مکمل تحقیقات کریں گے۔

11/11/2014 - 19:11:21 :وقت اشاعت