بند کریں
صحت صحت کی خبریںکوئٹہ ، پولیو ورکرز پر فائرنگ کا مقدمہ درج ،جاں بحق پولیو ورکز کے ورثا کو فی کس 20لاکھ روپے ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 27/11/2014 - 17:45:00 وقت اشاعت: 27/11/2014 - 17:37:13 وقت اشاعت: 27/11/2014 - 17:20:37 وقت اشاعت: 27/11/2014 - 16:25:08 وقت اشاعت: 27/11/2014 - 16:20:50 وقت اشاعت: 27/11/2014 - 16:10:18 وقت اشاعت: 27/11/2014 - 16:05:15 وقت اشاعت: 27/11/2014 - 15:56:47 وقت اشاعت: 27/11/2014 - 15:47:18 وقت اشاعت: 27/11/2014 - 15:05:13 وقت اشاعت: 27/11/2014 - 14:41:45

کوئٹہ ، پولیو ورکرز پر فائرنگ کا مقدمہ درج ،جاں بحق پولیو ورکز کے ورثا کو فی کس 20لاکھ روپے ، خاندان کے ایک ایک فرد کو سرکاری ملازمت فراہم کرنے کا اعلان ، زخمیوں کو علاج کی تمام تر بہتر سہولیات کی فراہمی کے اخراجات صوبائی حکومت برداشت کرے گی،بچوں کو حفاظتی ٹیکے لگانے والی ٹیم پر حملہ انسانیت سوز اور بچوں کے مستقبل پر حملہ ہے، بلوچستان مشکل صورتحال سے گزر رہا ہے، دہشت گردی ، شدت پسندی، فرقہ واریت، جہالت اور پسماندگی کا سامنا ہے ، ہمیں ملکر بلوچستان کو موذی بیماریوں ، پولیو، دہشت گردی، شدت پسندی، جہالت سے نجات اور امن و ترقی اور عوام کی خوشحالی کے لیے کام کرنا ہوگا

وزیر اعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ کااجلاس سے خطاب

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ تاز ترین اخبار۔ 27نومبر 2014ء)کوئٹہ کے علاقے مینگل آباد میں پولیو ورکرز پر فائرنگ کا مقدمہ درج ہونے کے بعد بلوچستان حکومت نے جاں بحق پولیو ورکز کے ورثا کو فی کس 20لاکھ روپے دینے، خاندان کے ایک ایک فرد کو سرکاری ملازمت بھی فراہم کرنے کا اعلان کر دیا، زخمیوں کو علاج کی تمام تر بہتر سہولیات کی فراہمی کے اخراجات بھی صوبائی حکومت برداشت کرے گی۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز کوئٹہ کے علاقے مینگل آباد میں پولیو ورکرز پر فائرنگ کا مقدمہ درج ہونے کے بعد بلوچستان حکومت نے جاں بحق پولیو ورکز کے ورثا کو فی کس 20لاکھ روپے دینے کا اعلان کر دیا۔وزیر اعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ نے کہا کہ شہیدوں کے خاندانوں کی صوبائی حکومت کفالت کریگی اور شہید ہونے والوں کے ورثاء کو 20, 20لاکھ روپے امداد جبکہ ان کے خاندان کے ایک ایک فرد کو سرکاری ملازمت بھی فراہم کی جائے گی اور زخمیوں کو علاج کی تمام تر بہتر سہولیات کی فراہمی کے اخراجات بھی صوبائی حکومت برداشت کرے گی۔

جمعرات کو حفاظتی ٹیکے لگانے والی ٹیم پر حملے سے متعلق اعلیٰ سطح اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ بلوچستان نے کہا کہ بچوں کو حفاظتی ٹیکے لگانے والی ٹیم پر حملہ انتہائی انسانیت سوز اور ہمارے بچوں کے مستقبل پر حملہ ہے، بلوچستان مشکل صورتحال سے گزر رہا ہے، ہمیں دہشت گردی ، شدت پسندی، فرقہ واریت، جہالت اور پسماندگی کا سامنا ہے ، لیکن ہمیں ملکر بلوچستان کو موذی بیماریوں ، پولیو، دہشت گردی، شدت پسندی، جہالت سے نجات اور امن و ترقی اور عوام کی خوشحالی کے لیے کام کرنا ہوگا۔

اس موقع پر چیف سیکریٹری بلوچستان سیف اللہ چٹھہ نے بتایا کہ ٹیکہ جات کی مہم اسی عزم اور جذبے کے ساتھ جاری رہے گی اورآج بھی معمول کے مطابق مہم چلائی جائے گی اور کوئٹہ میں سیکورٹی کے لیے موثر اور فول پروف اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔



27/11/2014 - 16:10:18 :وقت اشاعت