بند کریں
صحت صحت کی خبریںوزیر اعلی نے نئی زندگی دی ، رعشہ کے مرض کا علاج نہ کراتے تو پوری زندگی محتاج بن کر گزارنا پڑتی
تین ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 03/12/2014 - 19:06:26 وقت اشاعت: 03/12/2014 - 19:04:12 وقت اشاعت: 03/12/2014 - 18:36:31 وقت اشاعت: 03/12/2014 - 18:36:31 وقت اشاعت: 03/12/2014 - 18:29:19 وقت اشاعت: 03/12/2014 - 18:25:16 وقت اشاعت: 03/12/2014 - 17:33:15 وقت اشاعت: 03/12/2014 - 17:21:40 وقت اشاعت: 03/12/2014 - 17:16:27 وقت اشاعت: 03/12/2014 - 16:55:41 وقت اشاعت: 03/12/2014 - 16:53:37

وزیر اعلی نے نئی زندگی دی ، رعشہ کے مرض کا علاج نہ کراتے تو پوری زندگی محتاج بن کر گزارنا پڑتی

تین سال پہلے حادثے کے بعد اپنے ہاتھ سے پانی پینے کے قابل بھی نہیں رہا تھا ،اب برسرروزگا ہوں، , بے شمار لوگوں نے علاج کے لئے بھارت یا امریکہ جا کر علاج کرانے کا مشورہ دیا مگر وسائل نہ تھے ، , صحت یابی کے بعد مریدے کے رہائشی شکیل احمد اور اس کے اہل خانہ نے شکرانہ کے نوافل ادا کئے ، , پاکستان میں پہلی دفعہ ڈی بی ایس (Deep Brain Stimulation) کے ذریعے دماغ کے اندر توانائی پہنچا کر رعشہ اور پٹھوں کے کھچاوٴ کی بیماری کا کامیاب آپریشن کیا گیا، , وطن عزیز میں طبی شعبے میں جوہر قابل کی کمی نہیں: پرنسپل پی جی ایم آئی و جنرل ہسپتال پروفیسر انجم حبیب وہرہ کی گفتگو

لاہور(اُردو پوائنٹ تاز ترین اخبار۔ 03 دسمبر 2014ء)وزیر اعلی محمد شہباز شریف نے نئی زندگی دی اگر وہ خصوصی آپریشن کے ذریعے میرے رعشہ کے مرض کا علاج نہ کراتے تو پوری زندگی مفلوج اور محتاج بن کر گزارنا پڑتی - جس پر میں خدا کے حضور سر بسجود ہوں اور پرنسپل پی جی ایم آئی پروفیسر انجم حبیب وہرہ اور پروفیسر ڈاکٹر خالد محمود کا بھی شکر گزار ہوں - جنہوں نے ڈی بی ایس کے ذریعے میرا آپریشن کر کے ملک کے طبی شعبہ میں ایک نئی تاریخ رقم کی ہے - ان خیالات کا اظہار لاہور جنرل ہسپتال میں ڈی بی ایس آپریشن کے ذریعے رعشہ اور پٹھوں کی کچھاؤ کی بیماری سے صحت یاب ہونے والے مریدکے کے رہائشی شکیل احمد نے ہسپتال میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا - محمد شکیل طبی معائنہ کے لئے بدھ کے روز ایل جی ایچ آیا تھا اس موقع پر اس کی والدہ بشیراں بی بی اور بھائی طارق علی بھی اس کے ہمراہ تھے - انہوں نے ہسپتال میں شکرانہ کے نوافل ادا کئے اور کہا کہ انہیں بے شمار لوگوں نے بھارت یا امریکہ جا کر علاج کرانے کا مشورہ دیا تھا مگر اس کے پاس وسائل نہ تھے - ان حالات میں خادم پنجاب محمد شہباز شریف کی ہدایت پر پروفیسر خالد محمود نے ان کا آپریشن کر کے ان کو نئی زندگی دی - شکیل احمد کی والدہ نے بتایا کہ تین سال پہلے حادثے کے بعد میرا بیٹا اپنے ہاتھ سے پانی پینے کے قابل بھی نہ رہا تھا اور دوسروں پر بوجھ بن کر رہ گیا تھا مگر آپریشن کے بعد اب وہ برسرروزگار ہو چکا ہے -اس موقع پر پرنسپل پوسٹ گریجوایٹ میڈیکل انسٹی و امیر الدین میڈیکل کالج پروفیسر انجم حبیب وہرہ نے کہا کہ پاکستان میں پہلی دفعہ ڈی بی ایس (Deep Brain Stimulation) کے ذریعے دماغ کے اندر توانائی پہنچا کر رعشہ اور پٹھوں کے کھچاوٴ کی بیماری کا کامیاب آپریشن کیا گیا، وطن عزیز میں طبی شعبہ میں جوہر قابل کی کمی نہیں اگر وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف کی طرح اس ٹیلنٹ کی حوصلہ افزائی کی جائے اور صحت کے شعبہ کو وافر فنڈز مہیا کئے جائیں تو یہ شعبہ بہت ترقی کرے گا -انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ لاہور جنرل ہسپتال کو اسٹیٹ آف دی آرٹ شفا خانہ بنا دیا جائے گا جہاں شہریوں کو بہترین طبی سہولیات میسر ہوں گی -

03/12/2014 - 18:25:16 :وقت اشاعت