بند کریں
صحت صحت کی خبریںانسولین کی نئی گولی سے ذیابطیس کے مرض پر کنٹرول کیا جا سکتا ہے۔ تحقیقاتی رپورٹ

صحت خبریں

وقت اشاعت: 01/07/2007 - 12:47:41 وقت اشاعت: 28/06/2007 - 19:00:53 وقت اشاعت: 26/06/2007 - 15:51:57 وقت اشاعت: 24/06/2007 - 11:44:05 وقت اشاعت: 23/06/2007 - 20:53:48 وقت اشاعت: 23/06/2007 - 16:11:42 وقت اشاعت: 23/06/2007 - 16:00:45 وقت اشاعت: 23/06/2007 - 15:15:56 وقت اشاعت: 22/06/2007 - 17:59:36 وقت اشاعت: 21/06/2007 - 12:15:44 وقت اشاعت: 19/06/2007 - 13:35:53

انسولین کی نئی گولی سے ذیابطیس کے مرض پر کنٹرول کیا جا سکتا ہے۔ تحقیقاتی رپورٹ

لندن (اردوپوائنٹ تازہ ترین اخبار23 جون 2007)انسولین کی نئی گولی سے ذیابطیس کے مرض پر کنٹرول کیا جا سکتا ہے، ذیابیطس یا شوگر کے مریضوں کو شوگر کنٹرول کرنے لیے روزانہ انجیکشن نہیں لگانے پڑیں گے بلکہ یہ کام اب گولیوں سے لیا جائے گا۔ایک برطانوی تحقیقاتی ادارے کے ماہرین کی رپورٹ کے مطابق انسولین کی گولی سے زیابطیس کے مرض کو کنٹرول کیاجا سکتا ہے۔

کارڈیف یونیورسٹی کے ماہرین نے منہ سے انسولین لینے کے مسئلے کو حل کر لیا ہے۔ کیپسول پر موجود خاص کوٹنگ یا تہہ دوائی کو معدے میں ایسڈ سے بچاتی ہے اور اسے چھوٹی آنت تک جانے میں مدد دیتی ہے جہاں جا کر یہ حل ہو جاتی ہے۔ محققین 16 مریضوں پر کیے گئے اپنے ٹرائل کے نتائج امیریکن ڈائبیٹیز ایسوسی ایشن کو پیش کریں گے۔ ڈاکٹر سٹیو لوزیو کی تحقیق کے مطابق منہ سے دوائی کھانے سے بھی جسم میں وہ بنیادی تبدیلیاں لائی جا سکتی ہیں جو ذیابیطس کو کنٹرول کرنے کے لیے ضروری ہیں۔

ٹرائل میں یہ بھی دکھایا جائے گا کہ اگر گولیاں دن میں دو مرتبہ، صبح ناشتے سے پہلے اور شام کھانے سے پہلے، لی جائیں تو ٹائپ 2 ذیابطیس کے مریضوں میں کامیابی سے گلوکوز لیول کو کنٹرول کیا جا سکتا ہے۔ ڈئیابیٹیز یو کے نے نئی تحقیق کو خوش آمدید کہا ہے لیکن ساتھ ہی یہ بھی کہا ہے کہ اس میں احتیاط سے کام لینا چاہیئے۔ ڈئیابیٹیز یو کے کے ریسرچ مینیجر ڈاکٹر آئن فریم نے کہا کہ برطانیہ میں اس وقت 700,000 مریض ہیں جو انسولین کا انجیکشن لگاتے ہیں۔ ان میں سے کئی ایک یہ دن میں چار مرتبہ لگاتے ہیں۔ اس طرح اگر ان کا انجیکشن دوائی میں بدل جائے تو ان کے معیارِ زندگی میں کافی تبدیلی آ سکتی ہے۔
23/06/2007 - 16:11:42 :وقت اشاعت