بند کریں
صحت صحت کی خبریںسندھ حکومت کی جانب سے گنے کے ریٹ 182روپے مقررہونے کے باوجود شوگر ملوں کی من مانیوں کیخلاف ڈپٹی ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 15/12/2014 - 23:00:51 وقت اشاعت: 15/12/2014 - 21:56:49 وقت اشاعت: 15/12/2014 - 21:55:25 وقت اشاعت: 15/12/2014 - 21:16:06 وقت اشاعت: 15/12/2014 - 20:44:29 وقت اشاعت: 15/12/2014 - 20:06:21 وقت اشاعت: 15/12/2014 - 19:59:01 وقت اشاعت: 15/12/2014 - 18:48:43 وقت اشاعت: 15/12/2014 - 18:24:32 وقت اشاعت: 15/12/2014 - 17:43:19 وقت اشاعت: 15/12/2014 - 17:23:55

سندھ حکومت کی جانب سے گنے کے ریٹ 182روپے مقررہونے کے باوجود شوگر ملوں کی من مانیوں کیخلاف ڈپٹی کمشنر آفس کے سامنے احتجاجی مظاہرہ

ٹنڈومحمدخان (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔15دسمبر 2014ء) سندھ ترقی پسند پارٹی و آبادگار وں کا شوگر ملوں کی بندش ، سندھ حکومت کی جانب سے گنے کے ریٹ 182روپے مقررہونے کے باوجود شوگر ملوں کی من مانیوں کیخلاف ڈپٹی کمشنر آفس کے سامنے احتجاجی مظاہرہ ودھرنا، ٹریفک معطل ۔ تفصیلات کے مطابق سندھ ترقی پسندپارٹی و آبادگاروں نے شوگر ملوں کی بندش ، گنے کے مقرر کردہ حکومتی ریٹ پر عمل درآمد نہ کئے جانے کیخلاف مرکزی رہنماؤں ڈاکٹر احمد نوناری ، آبادگار رہنماؤں شبیر میمن ، سلیم گدی پٹھان ، اعجاز نوناری ، اقبال ہاجانو ودیگر کی قیادت میں ڈپٹی کمشنر آفیس کے سامنے حیدرآباد بدین روڈ پر احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے دھرنا دیا جس کے باعث ٹریفک معطل ہوکر رہ گئی ، اس موقع پر مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ حکومت سندھ کی جانب سے گنے کا نرخ 182روپے مقرر کیا گیا ہے ، لیکن شوگر ملیں اس پر عمل نہیں کررہیں ، شوگر مل مالکان بلا جواز کٹوتیاں کرنے میں مصروف ہیں ، جبکہ حکمران جماعت کے بااثر افراد کے اشاروں پر ٹنڈومحمدخان شوگر مل اور سیری شوگر مل سمیت دیگر شوگر ملوں کے سیکٹر آفیس بند کرادئے گئے ہیں ، جس کے باعث ہزاروں لوگ بیروزگار ہوگئے ہیں اور آبادگار سخت پریشانی سے دو چارہیں ، ایک ساز ش کے تحت سندھ کے آبادگاروں اور شوگر مل ملازمین کا معاشی قتل عام کیا جارہا ہے جوکہ ناقابل قبول ہے ، مظاہرین نے اعلان کیا کہ اگر آبادگاروں کیساتھ زیادتیوں کا سلسلہ بند کیا جائے بعد ازاں ڈپٹی کمشنر آصف میمن کی یقینی دیہانی پر مظاہرین نے اپنا احتجاج ختم کردیا ۔

15/12/2014 - 20:06:21 :وقت اشاعت