بند کریں
صحت صحت کی خبریںفرانسیسی حکومت کی صحت پالیسی، سیکڑوں ڈاکٹر سراپا احتجاج بن گئے

صحت خبریں

وقت اشاعت: 16/03/2015 - 14:13:45 وقت اشاعت: 16/03/2015 - 14:05:23 وقت اشاعت: 16/03/2015 - 14:02:29 وقت اشاعت: 16/03/2015 - 13:40:30 وقت اشاعت: 16/03/2015 - 13:13:17 وقت اشاعت: 16/03/2015 - 12:29:26 وقت اشاعت: 16/03/2015 - 12:21:02 وقت اشاعت: 16/03/2015 - 12:19:05 وقت اشاعت: 16/03/2015 - 12:15:34 وقت اشاعت: 16/03/2015 - 12:03:46 وقت اشاعت: 16/03/2015 - 11:42:57

فرانسیسی حکومت کی صحت پالیسی، سیکڑوں ڈاکٹر سراپا احتجاج بن گئے

پیرس (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔16مارچ۔2015ء ) فرانسیسی حکومت کی صحت پالیسی کے خلاف سیکڑوں ڈاکٹر سراپا احتجاج بن گئے۔عالمی میڈیاکے مطابق فرانسیسی حکومت جلد ہی ہیلتھ ریفارم بل پارلیمنٹ میں منظوری کیلئے پیش کرنے والی ہے جس کے مطابق کم آمدنی والے افراد ڈاکٹر کو فیس دئیے بغیر اپنا علاج کرا سکیں گے جبکہ حکومت بعد میں ڈاکٹروں کو فیس ادا کرے گی۔ اس وقت ایک فرانسیسی شہری 23 یورو فیس دے کر کسی بھی ڈاکٹر سے کنسلٹ کر سکتا ہے جسے بعد میں حکومت ادا کر دیتی ہے۔ ملک بھر سے آئے ڈاکٹروں نے بل کی مخالفت میں دارالحکومت پیرس میں شدید احتجاج کیا۔ ڈاکٹروں کا کہنا تھا کہ حکومت کو طبی ماہرین سے مشورہ کے بغیر بل منظور نہیں کرنے دیں گے۔

16/03/2015 - 12:29:26 :وقت اشاعت