بند کریں
صحت صحت کی خبریںانسداد پولیومہم ‘16ہزار چار سو سے زائد خاندانوں نے اپنے بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 19/03/2015 - 16:20:49 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 16:10:04 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 15:14:58 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 14:45:15 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 14:09:27 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 13:30:01 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 12:13:47 وقت اشاعت: 19/03/2015 - 12:12:45 وقت اشاعت: 18/03/2015 - 19:49:49 وقت اشاعت: 18/03/2015 - 19:49:49 وقت اشاعت: 18/03/2015 - 17:41:39

انسداد پولیومہم ‘16ہزار چار سو سے زائد خاندانوں نے اپنے بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے سے انکار کر دیا

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔19مارچ۔2015ء)ملک میں جاری انسداد پولیو مہم کے دوران 16 ہزار 4 سو سے زائد خاندانوں نے اپنے بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے سے انکار کردیا ‘انسداد پولیو مہم کے دوران گھر پر موجود نہ ہونے کے باعث 6 لاکھ 10 ہزار 3 سو 33 بچوں کو پولیو سے بچاوٴ کے قطرے پینے سے محروم رہے۔ملک بھر میں حالیہ تین روزہ انسداد پولیو مہم کا آغاز پیر کے روز سے شروع کیا گیا تھا اور اس مہم میں پانچ سال سے کم عمر 3 کروڑ 55 لاکھ بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جانے تھے۔

حکومت کی جانب سے بچوں کو ان کے گھر پر پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے کیلئے 80 ہزار ٹیمیں تشکیل دیں ‘9 ہزار ٹیمیں مستقل مقامات اور 4 ہزار ٹیموں کو مک کے داخلی اور خارجہ راستوں پر تعینات کیا گیا تھا۔ایمرجنسی آپریشن سینٹر کے عہدیدار نے کہا کہ ابتدائی طور پر یہ طے پایا تھا کہ مہم پنجاب کے 36 اضلاع، خیبر پختونخوا کے 25 اضلاع، سندھ کے 22 اضلاع اور 18 ٹاونز، بلوچستان کے 32 اضلاع، آزاد جموں و کشمیر کے 10، گلگت بلتستان کے 7، وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقہ جات کے 6 اور وفاقی دارلحکومت اسلام آباد کے 2 اضلاع میں شروع کی جانی تھی۔

انہوں نے کہاکہ بعض علاقوں میں موسم کی خرابی، ہیلتھ ورکرز کی عدم دستیابی اور سیکیورٹی وجوہات کی وجہ سے پولیو مہم کو ملتوی کرنا پڑا۔ادھر محکمہ قومی صحت سروسز کی وزیر سائرہ افضل تارڑ نے انسداد پولیو مہم کی ٹیموں کو فراہم کی جانے والی سیکیورٹی کے انتظامات کا جائزہ لینے کے لئے اجلاس طلب کرلیا ۔

19/03/2015 - 13:30:01 :وقت اشاعت