بند کریں
صحت صحت کی خبریںباچاخان ایئر پورٹ پر پولیو کاؤنٹر ختم ہونے سے مسافر پریشان، روزانہ درجنوں مسافروں کو بیرونی ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 17/05/2015 - 13:07:31 وقت اشاعت: 17/05/2015 - 12:30:03 وقت اشاعت: 16/05/2015 - 21:07:48 وقت اشاعت: 16/05/2015 - 20:36:21 وقت اشاعت: 16/05/2015 - 20:08:36 وقت اشاعت: 16/05/2015 - 19:46:05 وقت اشاعت: 16/05/2015 - 19:04:25 وقت اشاعت: 16/05/2015 - 18:19:43 وقت اشاعت: 16/05/2015 - 18:16:05 وقت اشاعت: 16/05/2015 - 18:02:58 وقت اشاعت: 16/05/2015 - 17:52:20

باچاخان ایئر پورٹ پر پولیو کاؤنٹر ختم ہونے سے مسافر پریشان، روزانہ درجنوں مسافروں کو بیرونی ممالک جانے سے روک دیاجاتاہے

امیگریشن حکام پولیو قطرے پلانے والے کارکنوں کو تنگ کرتے تھے ، مجبوراً کاؤنٹر ختم کردیا گیا، متعدد مرتبہ اعلیٰ حکام کو تحریری طورپر آگاہ کیا ، ابھی تک کوئی کارروائی نہیں کی گئی ،محکمہ صحت کے ادارے ایئرپورٹ ہیلتھ اسٹیبلشمنٹ کی سربراہ ڈاکٹر کشمالہ اورکزئی نے برطانوی نشریاتی ادارے سے گفتگو

پشاور/لندن (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 16 مئی۔2015ء)پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا کے باچا خان ایئر پورٹ سے بیرونی ممالک جانے والے مسافروں کے لیے پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے کا کاؤنٹر نہ ہونے کی وجہ سے روزانہ درجنوں مسافروں کو بیرونی ممالک جانے سے روکا جا رہا ہے۔ تفصیلات کے مطابق ایک سال پہلے باچا خان ہوائی اڈے کے بین لاقوامی ڈیپارچر لاونچ میں پولیو کا ایک کاؤنٹر بنایا گیا تھا تاہم امیگریشن حکام کی جانب سے یہ کاؤنٹر نامعلوم وجوہات کی بنا اب ختم کردیا گیا ہے۔

امیگریشن حکام پولیو کے قطرے پلانے والے کارکنوں کو اکثر اوقات تنگ کیا کرتے تھے جس کی وجہ سے مجبوراً کاؤنٹر ختم کردیا گیا۔باچا خان ایئر پورٹ ذرائع کا کہنا ہے کہ کوئی ایسا دن نہیں گزرتا جب امیگریشن حکام کی جانب سے مسافروں کو پولیو کا سرٹیفکیٹ نہ ہونے کی وجہ سے جہازوں سے آف لوڈ نہ کیا جاتا ہو۔باچا خان ایئر پورٹ میں وفاقی حکومت کے تحت چلنے والے محکمہ صحت کے ادارے ایئرپورٹ ہیلتھ اسٹبلشمینٹ کی سربراہ ڈاکٹر کشمالہ اورکزئی نے برطانوی نشریاتی ادارے کو بتایا کہ ایک سال پہلے ہوائی اڈے کے بین لاقوامی ڈیپارچر لاونچ میں پولیو کا ایک کاؤنٹر بنایا گیا تھا تاہم امیگریشن حکام کی جانب سے یہ کاؤنٹر نامعلوم وجوہات کی بنا اب ختم کردیا گیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ امیگریشن حکام پولیو کے قطرے پلانے والے کارکنوں کو اکثر اوقات تنگ کیا کرتے تھے جس کی وجہ سے مجبوراً کاؤنٹر ختم کردیا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ انھوں نے متعدد مرتبہ اعلی حکام کو تحریری طورپر آگاہ بھی کیا ہے لیکن ابھی تک کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے۔پشاورکے ایک رہائشی احسان اﷲ نے بتایا کہا کہ چند دن پہلے انھیں بھی 20 افراد سمیت امیگریشن حکام نے مختلف حیلوں بہانوں سے بیرونی ممالک جانے سے روکا حالانکہ ان کے پاس ویزا اور دیگر تمام قانونی دستاویزات موجود تھے۔

انھوں نے کہا کہ ملک کے تمام ہوائی اڈوں پر پولیو کے کاؤنٹر پہلے سے موجود ہیں لیکن باچا خان واحد ایئر پورٹ جہاں یہ کاؤنٹر بغیر کسی وجہ کے ختم کردیا گیا ہے۔محکمہ صحت پشاور کے ایک اعلی افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی بتایا کہ وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف آئی اے کے بعض اہل کار پولیو کے قطرے پلانے والے کارکنوں کو ایئر پورٹ کی حدود میں آزادانہ طورپر کام کرنے سے روکتے رہے ہیں جس کی وجہ سے مجبوراً پولیو کاؤنٹر بند کردیا گیا۔انھوں نے کہا کہ یہ شکایت اعلیٰ حکام کی نوٹس میں بھی لائی گئی ہے لیکن ابھی تک کوئی کارروائی نہیں ہوئی ہے۔

16/05/2015 - 19:46:05 :وقت اشاعت