بند کریں
صحت صحت کی خبریں تھیلیسیمیا کے مریضوں کی مدد کیلئے کئی ادارے کام کر رہے ہیں ،صحت کے مسائل کے حل اور تھیلے سیمیا ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 10/05/2016 - 19:26:39 وقت اشاعت: 10/05/2016 - 17:01:17 وقت اشاعت: 10/05/2016 - 16:17:47 وقت اشاعت: 10/05/2016 - 14:00:51 وقت اشاعت: 10/05/2016 - 13:35:58 وقت اشاعت: 09/05/2016 - 22:43:43 وقت اشاعت: 09/05/2016 - 15:18:38 وقت اشاعت: 09/05/2016 - 14:32:33 وقت اشاعت: 09/05/2016 - 13:17:12 وقت اشاعت: 07/05/2016 - 20:55:05 وقت اشاعت: 07/05/2016 - 15:12:21

تھیلیسیمیا کے مریضوں کی مدد کیلئے کئی ادارے کام کر رہے ہیں ،صحت کے مسائل کے حل اور تھیلے سیمیا مرض پر قابو پانے کے لیے پوری قوم متحرک ہو جائے، پاکستان بیت المال دور دراز اور پسماندہ علاقوں میں اس مرص کے علاج کے مراکز قائم کرے

صدر مملکت ممنون حسین کاتھیلیسیمیا کے عالمی دن کے موقع پر تقریب سے خطاب

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔09 مئی۔2016ء)صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ صحت کے مسائل کے حل اور تھیلے سیمیا مرض پر قابو پانے کے لیے پوری قوم متحرک ہو جائے اور پاکستان بیت المال دور دراز اور پسماندہ علاقوں میں اس مرص کے علاج کے مراکز قائم کرے۔وہ پیر کو تھیلے سیمیا کے عالمی دن کے موقع پر تقریب سے خطاب کررہے تھے۔اس موقع پر سائرہ افضل تارڑ ، وفاقی وزیر صحت ، شیخ آفتاب احمد ، وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور ، شیخ انور عزیز ، میئر اسلام آباد اور عابد وحید شیخ، چیئر مین پاکستان بیت المال بھی موجود تھے۔

صدر مملکت نے کہا کہ تھیلے سیمیا کے مریضوں کی مدد کے لیے ملک میں کئی ادارے کام کر رہے ہیں لیکن پاکستان بیت المال کی جانب سے ایسے ادارے کا قیام بہت اہم ہے کیونکہ اس کا نیٹ ورک پورے ملک میں موجود ہے جس سے آبادی کا ایک بڑا حصہ فائدہ اٹھاسکے گا۔ اس کے علاوہ تھیلے سیمیا کا علاج بہت مہنگا اور صبر آزما ہے جس کے لیے جدید ترین سہولتوں سے آراستہ تھیلے سیمیا سینٹر کے قیام پر حکومت تعریف کی مستحق ہے۔

صدر مملکت نے کہا کہ تھیلے سیمیا کے علاج کے ساتھ ساتھ اس مرض کو قابو کرنے کے لیے اسباب سے آگاہی اور صحت کے بنیادی اصولوں سے واقفیت ضروری ہے۔ اس حوالے سے ملک کے مختلف حصوں میں قانون سازی کی گئی ہے لیکن ان اقدامات کو عملی جامہ پہنانے کے لیے اساتذہ ، علمائے کرام اور معاشرے میں احترام رکھنے والے لوگوں کو اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان تھیلے سیمیا سنٹر میں بہت بڑی تعداد میں مریضوں کاانتہائی تربیت یافتہ ڈاکٹروں اور طبی عملے کی نگرانی میں علاج کیا جاتا ہے لیکن ضرورت اس امر کی ہے کہ دور دراز اور پسماندہ علاقوں میں بھی ایسے مراکز کھولے جائیں تاکہ وہ لوگ بھی فائدہ اٹھا سکیں جہاں نجی ادارہ بھی میسر نہیں۔

انھوں نے مزید کہا کہ صحت کے مسائل انتہائی پیچیدہ ہیں جن کے لیے سرکاری اور رفاحی اداروں کو مل کر کام کرنا چاہیے۔صدر مملکت نے پاکستان بیت المال کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے کہا کہ یہ ادارہ اپنے ہم وطنوں کی خدمت کر رہا ہے جن میں یتیم بچوں کی کفالت ، چائلڈ لیبر کے خاتمہ اور نوجوانوں کو برسرروزگار بنانے کے لیے ٹھوس اقدامات شامل ہیں۔

09/05/2016 - 22:43:43 :وقت اشاعت