بند کریں
صحت صحت کی خبریںآدھے سر کا درد فالج اور امراضِ قلب کی وجہ بن سکتا ہے‘ تحقیق

صحت خبریں

وقت اشاعت: 03/06/2016 - 16:41:20 وقت اشاعت: 03/06/2016 - 16:25:04 وقت اشاعت: 03/06/2016 - 15:09:37 وقت اشاعت: 03/06/2016 - 14:14:52 وقت اشاعت: 02/06/2016 - 15:19:06 وقت اشاعت: 02/06/2016 - 12:48:21 وقت اشاعت: 01/06/2016 - 22:49:20 وقت اشاعت: 01/06/2016 - 15:24:00 وقت اشاعت: 01/06/2016 - 11:56:22 وقت اشاعت: 31/05/2016 - 17:52:48 وقت اشاعت: 31/05/2016 - 15:31:33

آدھے سر کا درد فالج اور امراضِ قلب کی وجہ بن سکتا ہے‘ تحقیق

لاہور ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔02 جون۔2016ء اگرچہ آدھے سر کا درد یعنی مائیگرین سے فالج کے خطرات پر پہلے ہی تحقیق ہوچکی ہے لیکن اب ایک حالیہ مطالعے سے انکشاف ہوا ہے کہ خصوصاً خواتین اگر آدھے سر کے درد کی شکار ہوں تو وہ مستقبل میں عارضہ قلب کی شکار بھی ہوسکتی ہیں۔اس دورے سے قبل یا دوران مریض کی آنکھوں کے سامنے روشنی کے جھماکے نظر آتے ہیں۔

بلائنڈ اسپاٹ کے ذریعے منظر کا کچھ حصہ دکھائی نہیں دیتا اور خود کو متوازن رکھنا دشوار ہوتا ہے اور اسے اورا کا نام دیا جاتا ہے جن افراد میں اورا نمایاں ہوتا ہے وہ فالج کے شکار ہوسکتے ہیں۔برٹش میڈیکل جرنل میں شائع ہونے والی حالیہ رپورٹ میں جرمنی اور امریکا کے کئی مریضوں کا جائزہ لیا گیا جس میں ایک لاکھ سے زائد خواتین کا مطالعہ کیا گیا تھا جن نہیں دل کا کوئی عارضہ لاحق نہیں تھا۔

مطالعہ کے بعد ان خواتین میں سے بعد میں ہزاروں نے مائیگرین کی شکایت کی اور بعض امراضِ قلب کی شکار ہوئیں جب کہ کئی خواتین موت کا شکار ہوگئیں۔ماہرین کے مطابق مطالعے سے معلوم ہوا کہ مائیگرین اور خصوصا اورا کی شکار خواتین کی بڑی تعداد امراضِ قلب، دل کے دورے ، انجائنا اور فالج کی شکار ہوسکتی ہیں۔ اسی طرح مائیگرین کی شکار خواتین میں فالج کا خطرہ بھی 50 فیصد زیادہ دیکھا گیا تھا۔

02/06/2016 - 12:48:21 :وقت اشاعت