بند کریں
صحت صحت کی خبریں سست طرز زندگی دل کے امراض کا باعث بنتاہے،طبی ماہرین

صحت خبریں

وقت اشاعت: 26/07/2016 - 11:08:03 وقت اشاعت: 25/07/2016 - 22:21:40 وقت اشاعت: 25/07/2016 - 12:21:38 وقت اشاعت: 25/07/2016 - 11:44:29 وقت اشاعت: 25/07/2016 - 11:42:16 وقت اشاعت: 23/07/2016 - 18:20:21 وقت اشاعت: 23/07/2016 - 17:55:49 وقت اشاعت: 23/07/2016 - 16:44:19 وقت اشاعت: 23/07/2016 - 16:40:12 وقت اشاعت: 23/07/2016 - 16:17:32 وقت اشاعت: 23/07/2016 - 16:17:32

سست طرز زندگی دل کے امراض کا باعث بنتاہے،طبی ماہرین

ٹیکساس۔ 23 جولائی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔23 جولائی ۔2016ء) طبی ماہرین نے کہا ہے کہ سست طرز زندگی دل کے امراض کا باعث بنتا ہے۔ امریکا میں ٹیکساس یونیورسٹی کے طبی ماہرین کی تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق دن بھر میں 10 گھنٹے تک بیٹھے رہنا امراض قلب کا خطرہ 8 فیصد تک بڑھا دیتا ہے۔تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ سست طرز زندگی خون کے شریانوں کے امراض کا باعث بنتا ہے ، اس کے نتیجے میں جسمانی وزن بڑھتا ہے جو مختلف بیماریوں کا باعث بنتا ہے۔

تحقیق کے مطابق جسمانی سرگرمیاں بلڈ پریشر، کولیسٹرول کی سطح کو کم جبکہ صحت مند وزن کو برقرار رکھنے میں مددگار ثابت ہوتی ہیں جس کے نتیجے میں دل کے دورے یا فالج کا خطرہ کم ہوجاتا ہے۔طبی ماہرین کا کہنا تھا کہ لوگوں کے لیے ضروری ہے کہ وہ جسمانی طور پر متحرک زندگی گزاریں۔اس تحقیق کے دوران طبی ماہرین نے 7 لاکھ سے زائد افراد پر ہونے والی سابقہ 9 تحقیقی رپورٹس کا تجزیہ کرکے بیٹھے رہنے کے وقت اور ہارٹ اٹیک سمیت فالج جیسے امراض کے درمیان تعلق کو دریافت کیا۔ان کا کہنا تھا کہ اپنا زیادہ وقت بیٹھ کر ٹی وی دیکھتے یا ڈرائیونگ کرتے گزارنے والے افراد میں یہ خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔

23/07/2016 - 18:20:21 :وقت اشاعت