بند کریں
صحت صحت کی خبریںسی ڈی اے انسداد پولیومہم ، انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی

صحت خبریں

وقت اشاعت: 22/09/2016 - 15:04:36 وقت اشاعت: 22/09/2016 - 14:06:14 وقت اشاعت: 22/09/2016 - 12:33:47 وقت اشاعت: 22/09/2016 - 12:08:56 وقت اشاعت: 21/09/2016 - 17:01:49 وقت اشاعت: 21/09/2016 - 16:11:58 وقت اشاعت: 21/09/2016 - 12:16:30 وقت اشاعت: 21/09/2016 - 12:08:59 وقت اشاعت: 21/09/2016 - 11:42:29 وقت اشاعت: 20/09/2016 - 17:45:09 وقت اشاعت: 20/09/2016 - 15:08:17

سی ڈی اے انسداد پولیومہم ، انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی

اسلام آباد ۔ 21 ستمبر (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔21 ستمبر۔2016ء) وفاقی ترقیاتی ادارہ (سی ڈی اے) کے زیر اہتمام انسداد پولیومہم 26 ستمبر سے شروع ہوگی جس کے لئے انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی۔ سی ڈی اے کے حکام کے مطابق مہم میں 600 پولیو ٹیمیں شامل ہوں گی جن میں 453 موبائل ٹیمیں 53 ٹرانزٹ ٹیمیں اور 95 مستقل ٹیمیں ہیں جو اسلام آباد کے مختلف علاقوں میں 5 سال سے کم عمر کے ایک لاکھ 40 ہزار 835 بچوں کو پولیو کے قطرے پلائیں گی۔

مہم کو کامیاب بنانے اور موثر نگرانی کو یقینی بنانے کے لئے اسلام آباد کو 21 مختلف زونز میں تقسیم کیا گیا ہے جہاں پر 21 زونل انچارج اور 107 ایریا انچارج مہم کی نگرانی کریں گے۔ حکام کے مطابق میئر اسلام آباد و چیئرمین سی ڈی اے شیخ انصر عزیزنے کہا ہے کہ سی ڈی اے اور ایم سی آئی کے تمام شعبے پولیو کے خاتمہ کے لئے مل کر کام کر یں گے تاکہ اس مہم کو مزید کامیاب بنایا جا سکے۔

شیخ انصر عزیز نے کہا کہ پولیو کے خاتمہ کی مہم کو کامیاب بنانے کے لئے ڈائریکٹوریٹ آف ہیلتھ سروسز کو اضافی عملہ،گاڑیاں اور افرادی قوت کی فراہمی کو یقینی بنایا گیا ہے۔ انہوں نے ڈی جی ایچ آر ڈی کو ہدایت کی ہے کہ انسداد پولیو مہم کے لئے تعینات کئے گئے عملے کی ڈائریکٹوریٹ آف ہیلتھ سروسز میں حاضری کو یقینی بنایا جائے جبکہ سیکورٹی ڈائریکٹوریٹ کو ہدایت کی کہ اسلام آباد پولیس کے ساتھ ساتھ اپنے عملے کو بھی پولیو کی ٹیموں کے ہمراہ تعینات کیا جائے تاکہ پولیو ورکرز اپنے فرائض بہتر طریقے سے سر انجام دے سکیں۔

حکام نے بتایا کہ اسلام آباد کو پولیو سے پاک ہونے کے اعزاز کو قائم رکھنے کے لئے تمام دستیاب وسائل کو بروئے کار لایا جائے گا۔ پرائیویٹ تعلیمی اداروں سے بھی درخواست کی گئی ہے کہ وہ اسکولوں میں بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے میں سی ڈی اے اور ایم سی آئی کے ساتھ بھرپور تعاون کریں۔ پورے پاکستان سے پولیو کے خاتمے کے لئے مشترکہ اور مربوط کوششوں کی ضرورت ہے تاکہ ملک سے پولیو کا ہمیشہ کے لئے خاتمہ ہو سکے۔
21/09/2016 - 16:11:58 :وقت اشاعت