بند کریں
صحت صحت کی خبریںکائنات کی تخلیق کا راز جاننے کیلئے طبیعات کا سب سے طاقتور تجربہ

صحت خبریں

وقت اشاعت: 15/09/2008 - 20:44:45 وقت اشاعت: 14/09/2008 - 14:09:35 وقت اشاعت: 11/09/2008 - 16:58:10 وقت اشاعت: 11/09/2008 - 16:14:42 وقت اشاعت: 10/09/2008 - 23:34:11 وقت اشاعت: 10/09/2008 - 17:33:57 وقت اشاعت: 09/09/2008 - 21:42:30 وقت اشاعت: 09/09/2008 - 19:02:17 وقت اشاعت: 08/09/2008 - 20:26:33 وقت اشاعت: 08/09/2008 - 20:26:33 وقت اشاعت: 08/09/2008 - 13:41:55

کائنات کی تخلیق کا راز جاننے کیلئے طبیعات کا سب سے طاقتور تجربہ

پیرس (اردوپوائنٹ اخبا ر تازہ ترین10ستمبر2008 )نیوکلیائی ریسرچ کے یورپی ادارے سرن کے زیر اہتمام دنیا میں طبیعات کا سب سے طاقتور تجربہ کیا گیا جس کا مقصد کائنات کی تخلیق کا راز جاننا ہے۔ اس تجربے کے دوران انجینئر ذرات کی ایک لکیرکو 27 کلومیٹر طویل زیر زمین سرنگ نما مشین سے گزارنے کی کوشش کریں گے۔ اگرچہ اس تجربے کے بارے میں تین دہائی پہلے سوچا گیا تھا لیکن یہ پہلا موقع ہے کہ اسے عملی شکل دی جا رہی ہے۔

پانچ ارب پاوٴنڈ لاگت سے تیار ہونے والی اس مشین میں ذرات کو دہشت ناک طاقت سے آپس میں ٹکرایا جائے گا تاکہ نئی طبیعات میں تباہی کے علامتوں کو آشکار کیا جا سکے۔ اس تجربے کا بنیادی مقصد کائنات میں بِگ بینگ سے چند ثانیے بعد کے حالات کو از سرِ نو تخلیق کرنا ہے۔فرانس اور سوئٹزرلینڈ کی سرحد کے نیچے کھودی گئی اس بہت بڑی سرنگ میں ایک ہزار سلنڈر کی شکل کے مقناطیسوں کو ساتھ ساتھ رکھا گیا ہے۔

انہیں مقناطیسی سلنڈروں سے پروٹون ذرات کی ایک لکیر پیدا ہو گی جو 27 کلو میٹر تک دائرے کی شکل میں بنائی گئی سرنگ میں گھومے گی۔ سرنگ میں پروٹون ذرات کے ٹکرانے سے دو لکیریں پیدا ہوں گی جنہیں اس مشین کے اندر روشنی کی رفتار سے مخالف سمت میں سفر کرایا جائے گا۔ اس طرح ایک سیکنڈ میں یہ لکیریں گیارہ ہزار جست مکمل کریں گی۔ سرنگ کے اندر مقررہ جگہوں پر ذرات کی یہ لکیریں ایک دوسرے کا راستہ کاٹیں گی اور ان کے اس ٹکراوٴ کا مشاہدہ کیا جائے۔

سائنسدانوں کو امید ہے کہ اس تجربے کے دوران نئے سب آئٹم سامنے آئیں گے جن سے کائنات کی ہیت کو سمجھنے کے لیے بنیادی معلومات حاصل ہوں گی۔ واضح رہے کہ سرن کے زیر اہتمام ہونے والے اس تجربے میں پنجاب یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کرنے والے 2پاکستانی سائنسدان بھی شریک ہیں ۔
10/09/2008 - 17:33:57 :وقت اشاعت