بند کریں
صحت صحت کی خبریںوادی کو ادویات کی سپلائی روکنے پر دوا ساز کمپنیوں کے نمائندوں کا احتجاج ،عالمی انجمنوں سے ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 30/09/2008 - 20:52:03 وقت اشاعت: 27/09/2008 - 14:56:45 وقت اشاعت: 25/09/2008 - 15:11:35 وقت اشاعت: 25/09/2008 - 15:03:36 وقت اشاعت: 25/09/2008 - 13:34:25 وقت اشاعت: 25/09/2008 - 12:55:42 وقت اشاعت: 25/09/2008 - 11:53:58 وقت اشاعت: 24/09/2008 - 21:37:07 وقت اشاعت: 24/09/2008 - 17:10:52 وقت اشاعت: 24/09/2008 - 16:23:40 وقت اشاعت: 24/09/2008 - 15:41:30

وادی کو ادویات کی سپلائی روکنے پر دوا ساز کمپنیوں کے نمائندوں کا احتجاج ،عالمی انجمنوں سے فوری مداخلت کی اپیل

سرینگر(اُردو پوائنٹ تازہ ترین۔ 25ستمبر 2008ء) دواساز کمپنیوں کے سینکڑوں نمائندوں نے وادی کیلئے ادویات کی سپلائی روک دیئے جانے کے خلاف پریس کالونی میں احتجاجی مظاہرے کئے اورسلسلے میں میں ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن اور دیگر بین الاقوامی اداروں سے مداخلت کی اپیل کی۔تفصیلات کے مطابق وادی کی دوا ساز کمپنیوں کے نمائندوں نے کشمیر کے لئے ادویات کی سپلائی روک دئیے جانے کیخلاف کے ایم ڈی اڈہ سے پریس کالونی تک احتجاجی ریلی نکالی اورپریس کالونی میں دھرنا دیکر عالمی صحت تنظیموں ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن اور ریڈ کراس کوموجودہ حالات میں مداخلت کی اپیل کی تاکہ وادی میں ادویات کی کمی کو دور کیا جا سکے ۔

احتجاج میں وادی کے نامی گرامی دوا ساز ڈسٹری بیوٹروں نے بھی شرکت کی ۔احتجاج میں شامل دوا ساز ”جموں کا جو یار ہے ،غدار ہے غدار ہے “کے نعرے لگا رہے تھے ۔انہوں نے اپنے ہاتھوں میں پلے کارڈس اور بینر اٹھا رکھے تھے جن پر دواساز کمپنیوں گلکسو، سپلا، کیڈلا، ٹورنٹ ، فائیزر، انٹاس ، رینبکسی ، ووکارڈ، گلن مارک ، زائڈس کے خلاف نعرے درج تھے۔

احتجاجی دوا سازوں نے بتایا کہ جموں کے فارمسٹ کی دھمکیوں سے مرعوب ہوکر ان کمپنیوں کے ڈیلروں نے وادی کی سپلائی روک دی ہے جسکی وجہ سے وادی کوسپلائی ہو نے والی اہم ادویات کی شدید قلت پیدا ہونے لگی ہے ۔انہوں نے بتایا کہ وادی کے اسپتالوں میں اہم ادویات کی شدید قلت پائی جا رہی ہے جس کی وجہ لل دید ہسپتال اور صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ میں داخل مریضوں کے آپریشن نہیں ہورہے پارہے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ وادی کیلئے براہ راست حیات بخش ادویات کی سپلائی روک کرانِ کمپنیوں کی طرف سے جموں سے ہی ادویات سپلائی کرنے کا فیصلہ کیا گیاہے جبکہ وادی کے ڈسٹی بیوٹر جموں سے ادویات منگوانے پر اسلئے آمادہ نہیں ہوتے کیونکہ جموں میں شرپسند عناصر نے وادی کی اقتصادی ناکہ بندی کرکے یہاں کے لوگوں کیلئے زبردست مشکلات پیدا کیں۔انہوں نے بتایا کہ جن کمپنیوں نے وادی کیلئے براہ راست ادویات سپلائی کرنے سے انکار کر دیا ہے وہ ذیابیطس، بلڈپریشر، مرگی اور دمے وغیرہ کی ادویات بنانے میں مشہور ہیں اور ان کمپنیوں کی طرف سے ادویات کی سپلائی بند کرنے سے وادی کے ہسپتالوں میں تشویشناک صورتحال پیدا ہو گئی ہے اور ہزاروں کی تعداد میں مریض مشکلات سے دو چار ہو گئے ہیں۔

احتجاجی دوا سازوں نے وادی ڈاکٹروں کو مشورہ دیا کہ وہ مذکورہ کمپنیوں کی ادویات کو تجویز کرنا بند کرکے انہیں بلیک لسٹ کریں۔انہوں نے عالمی صحت تنظیموں ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن ،ریڈ کراس اور انسانی حقوق تنظیموں کوموجودہ حالات میں مداخلت کی اپیل کی تاکہ وادی میں ادویات کی کمی کو دور کیا جا سکے اور وادی کیلئے ہر قسم کی ادویات کی سپلائی باقاعدگی سے جاری رہ سکے۔ادھر ڈورو اسلام آباد میں بھی مختلف دوا ساز کمپنیوں کے نمائندوؤں نے ادویات کی کمی کیخلاف احتجاجی مظاہرے کئے اور تحصیلدار کو ایک میمورنڈم پیش کیا۔
25/09/2008 - 12:55:42 :وقت اشاعت