بند کریں
صحت صحت کی خبریںچین کا پاکستان کیساتھ چشمہ تھری اور فور پلانٹ لگانے کا معاہدہ،چین کیساتھ اقتصادی تعلقات ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 26/10/2008 - 12:41:16 وقت اشاعت: 25/10/2008 - 22:23:57 وقت اشاعت: 23/10/2008 - 10:48:58 وقت اشاعت: 22/10/2008 - 13:25:56 وقت اشاعت: 18/10/2008 - 16:16:01 وقت اشاعت: 18/10/2008 - 14:15:34 وقت اشاعت: 18/10/2008 - 13:28:49 وقت اشاعت: 17/10/2008 - 20:56:57 وقت اشاعت: 17/10/2008 - 16:13:41 وقت اشاعت: 17/10/2008 - 16:13:17 وقت اشاعت: 17/10/2008 - 12:57:03

چین کا پاکستان کیساتھ چشمہ تھری اور فور پلانٹ لگانے کا معاہدہ،چین کیساتھ اقتصادی تعلقات کو موٴثر بنانے کیلئے5سالہ منصوبے کا فیصلہ،دو طرفہ تعلقات کے فروغ کیلئے صدر زرداری ہر3ماہ بعد چین کا دورہ کریں گے،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی پریس کانفرنس

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔18اکتوبر۔2008ء)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ چین کے ساتھ چشمہ تھری اور فور پلانٹ لگانے کا معاہد ہوا ہے جس سے چھ سو اسی میگاواٹ بجلی حاصل ہوگی ۔ اسلام آباد میں مشیر خزانہ کے ساتھ پریس کانفرنس میں انہوں نے بتایا کہ فیصلہ کیا گیا ہے دوطرفہ تعلقات کو فروغ دینے کیلئے صدر زداری ہر تین ماہ بعد چین کا دورہ کریں گے ۔

وزیر خارجہ نے کہا سول جو ہری معاہدے کے سلسلے میں بھی بیجنگ سے تعلقات مزید بہتر ہو ئے ہیں اور دورہ چین کے دوران پاکستانی قیادت نے چین سے کھل کر ملک کے اقتصادی مسائل پر بات چیت کی ۔ شاہ محمود قریشی نے کہاکہ پاک چین تجارتی تعلقات میں فروغ اور وسعت کے لیے انڈسٹریل زون قائم کیے جائیں گے ۔انہوں نے کہاکہ چین کے چار بڑے بینکوں کے سربراہ جلد پاکستان کا دورہ کریں گے اور عنقریب پاکستا ن میں چینی بینکوں کی شاخیں کھلیں گی ۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ چین نے فرینڈز آف پاکستان میں بھر پور شمولیت اور تعاون کا یقین دلایا ہے ۔انہوں نے کہاکہ چین کے ساتھ اقتصادی تعلقات کے موثر فروغ کے لیے پانچ سالہ منصوبے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور دو ہزار بارہ تک دونوں ممالک کے درمیان تجارت بلین ڈالر تک لے جائیں گے ۔شاہ محمود قریشی نے کہاکہ چین کے تعاون سے ملک میں موجد معدنی وسائل سے بھرپور فائدہ اٹھایا جائے گا جبکہ چین کو نئے سفارت خانے کی تعمیر کے لیے اسلام آباد میں زمین فراہم کی جارہی ہے ۔

اس موقع پر مشیر خزانہ شوکت ترین نے کہاکہ پاکستان میں مجموعی قومی پیداوار میں ٹیکس کا حصہ دنیا میں سب سے کم ہے جبکہ ٹیکس ٹو جی ڈی پی تناسب 10.5 سے بڑھا کر 15 فیصد کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ حکومتی خرچے ،افراط زر اور مرکزی بینک سے قرضوں کا حصول کم کرنا ہوگا۔ شوکت ترین نے کہا کہ چین کو سیمنٹ اور اسٹیل کے شعبے میں بھی سرمایہ کاری کی دعوت دی گئی ہے ۔
18/10/2008 - 14:15:34 :وقت اشاعت