بند کریں
صحت صحت کی خبریںلاکھوں متاثرین کورہائش ،خوراک ،ادویات اوردیگربنیادی ضروریات کی فراہمی ایک چیلنج ہے،وزیراعلی ..

صحت خبریں

وقت اشاعت: 12/05/2009 - 11:01:28 وقت اشاعت: 11/05/2009 - 12:41:18 وقت اشاعت: 10/05/2009 - 21:01:52 وقت اشاعت: 09/05/2009 - 11:35:08 وقت اشاعت: 08/05/2009 - 20:08:45 وقت اشاعت: 08/05/2009 - 20:03:15 وقت اشاعت: 08/05/2009 - 13:56:51 وقت اشاعت: 08/05/2009 - 13:14:08 وقت اشاعت: 08/05/2009 - 11:41:11 وقت اشاعت: 06/05/2009 - 21:46:28 وقت اشاعت: 06/05/2009 - 17:33:18

لاکھوں متاثرین کورہائش ،خوراک ،ادویات اوردیگربنیادی ضروریات کی فراہمی ایک چیلنج ہے،وزیراعلی سرحد

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔8 مئی ۔2009ء)صوبائی وزیراعلیٰ امیرحیدرخان ہوتی نے کہاہے کہ شورش زدہ علاقوں سے نقل مکانی کرکے آنے والے ہزاروں خاندانوں پرمشتمل لاکھوں افراد کورہائش ،خوراک ،ادویات اوردیگربنیادی ضروریات کی فراہمی ایک چیلنج ہے جس سے کامیابی کے ساتھ عہدہ برآہونے کیلئے سیاسی وابستگیوں کوخاطرمیں لائے بغیر اجتماعی کوششیں وقت کاتقاضاہیں کیونکہ یہ وقت سیاست کانہیں خدمت کاہے ۔

تمام سیاسی جماعتوں اورکارکنوں پرلازم ہے کہ وہ ان بے سروسامان اوربے خانماں خاندانوں کی مددمیں کوئی دقیقہ فروگزاشت نہ کریں جو اپناگھرباراورقیمتی اثاثے چھوڑ چھاڑ کرنقل مکانی پرمجبورہوئے ہیں۔انہوں نے یہ بات اپنے دفترمیں مردان صوابی سمیت مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے وفود سے باتیں کرتے ہوئے کہی ۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ وہ خودتمام کیمپوں میں امدادی سرگرمیوں کی مانیٹرنگ کررہے ہیں۔

انہوں نے امدادی عمل میں مصروف سرکاری اداروں اور غیر سرکاری تنظیموں ،رضاکاروں،سیاسی کارکنوں کوہدایت کی کہ متاثرین کی تکالیف کوکم کرنے اورمشکل کی اس گھڑی میں ان کی حوصلہ افزائی کے انتظامات پرنظررکھیں تاکہ کوئی مستحق فرد امداد سے محروم نہ رہے ۔انہوں نے متاثرین کیلئے ایک ارب روپے مالیت کے پیکج کااعلان کرنے پروزیراعظم پاکستان کاشکریہ اداکیا۔

انہوں نے اس یقین کااظہارکیاکہ اپنے علاقوں کوچھوڑ کرآنے والے لوگوں کی قربانیاں اورمشکلات دیرپاامن کاپیش خیمہ ثابت ہوں گی ۔ انہوں نے کہاکہ زندہ قومیںآ زمائشوں،تکالیف اوربحرانوں کاسامنا عزم وحمت اورحوصلے سے کرتی ہیں۔پختون قوم بھی اپنی تاریخی روایا ت کو برقراررکھتے ہوئے قومی بقاء کی اس جدوجہدمیں ضرور کامیاب ہوگی ۔انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت اپنے تمام تروسائل بے گھرہونے والے عوام کیلئے وقف کردے گی ۔

وزیراعلیٰ نے پاکستانی قوم ،بیرون ملک رہائش پذیرہم وطنوں اورامداددینے والے عالمی اداروں سے اپیل کی کہ وہ اس نازک وقت میں صوبائی حکومت کی معاونت میں اپنابھرپورکرداراداکریں۔انہوں نے کیمپوں میں مقیم بے سہاراخاندانوں کی مددمیں مصروف لوگوں کی کاوشوں کوقومی ایثار،قربانی اورہمدردی کے جذبوں کاآئینہ دارقراردیا۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ ولی کنڈاؤ،دیرپائین،تیمرگرہ ،ثمرباغ ،شیخ شہزادٹاؤن ،جلالہ مردان اوریارحسین صوابی میں قائم کردہ کیمپوں میں دس ہزارافرادمقیم ہیں جبکہ ساٹھ ہزارسے زائد بے گھرافرادکیمپوں سے باہرمقامی لوگوں اوررشتہ داروں کے ہاں ٹھہرے ہوئے ہیں۔

علاوہ ازیں مختلف اضلاع میں پہلے سے قائم گیارہ کیمپوں میں ایک لاکھ افرادپرمشتمل پندرہ ہزارتک خاندان رہائش پذیرہیں۔صوبائی حکومت اوریواین ایچ سی آرکے تعاون سے آئی ڈی پیز کی رجسٹریشن کاعمل تیزی سے جاری ہے ۔اب تک صوبے کے گیارہ اضلا ع میں کیمپوں سے باہر رہنے والے تقریباً ساڑھے چارلاکھ افراد کی رجسٹریشن ہوچکی ہے ۔مذکورہ بالاکیمپوں کے علاوہ صوبے کے دیگرحصوں میں مزیدکیمپ بھی لگائے جارہے ہیں جہاں متاثرین کوپینے کے صاف پانی ،ادویات ،خوراک اوردیگرغذائی اجناس فراہم کرنے کے بھرپورانتظامات کیے گئے ہیں۔
08/05/2009 - 20:03:15 :وقت اشاعت