بحرین: غیر مُلکی ملازمہ نے تنخواہ نہ مِلنے پر مالک کے گھر کو آگ لگا دی

تنخواہ کا مطالبہ کرنے پر مالک نے ملازمہ کو ’احمق‘ بھی قرار دیا تھا

Muhammad Irfan محمد عرفان جمعرات مئی 14:56

بحرین: غیر مُلکی ملازمہ نے تنخواہ نہ مِلنے پر مالک کے گھر کو آگ لگا دی
منامہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین،16 مئی 2019ء) بحرین کے دارالحکومت منامہ میں ایک غیر مُلکی گھریلو ملازمہ نے مالک کی جانب سے تنخواہ نہ دینے اور اُسے احمق کہنے پر گھر کو آگ لگا دی۔ بحرینی اخبار البلاد کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ ایک افریقی ملک سے تعلق رکھنے والی ملازمہ کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق یہ واقعہ المحروق کے علاقے میں پیش آیا۔

ملازمہ گھر کو آگ لگانے کے بعد وہاں سے فرار ہو گئی تاہم اُسے پولیس کی جانب سے گرفتار کر لیا گیا۔ گرفتار گھریلو ملازمہ نے تفتیشی اہلکاروں کو بتایا کہ اُس کے مالک نے اُسے تنخواہ دینے سے انکار کر دیا تھا، حتیٰ کہ وہ اُسے اپنے آبائی وطن میں موجود گھر والوں سے رابطہ بھی نہیں کرنے دیتا تھا۔ وقوعہ کے روز مالک سے تنخواہ کا مطالبہ کرنے پر مالک نے اُس کی سخت بے عزتی کی یہاں تک کہ اُسے احمق بھی کہہ ڈالا۔

(جاری ہے)

جس پر وہ شدید مشتعل ہو گئی اور اُس نے ارادہ کر لیا کہ وہ کچھ ایسا کرے گی جس سے مالک کو صحیح معنوں میں اذیت پہنچے۔ بدلہ لینے کی خاطر اُس نے مالک کی بیٹی کے کمرے میں پڑے بیڈ کو آگ لگا دی اور موقع سے فرار ہو گئی۔ دیکھتے ہی دیکھتے آگ نے سارے کمرے کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ جس پر فائر بریگیڈ طلب کی گئی۔ جس نے موقع پر پہنچ کر آگ پر قابو پایا۔ عدالت میں استغاثہ نے ملازمہ پر گھر کو نذرِ آتش کر کے انسانی جانوں کو خطرے میں ڈالنے اور قیمتی سامان کو ضائع کرنے کی کوشش کرنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ اس مقدمے کی اگلی سماعت 2 جُون 2019ءکو ہو گی۔ واضح رہے کہ بحرین میں موجود غیر مُلکی ملازمین میں سے 55 فیصد گھریلو مرد و خواتین ملازمین ہیں۔

متعلقہ عنوان :

منامہ میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments