عمان ؛ مسقط بین الاقوامی ہوائی اڈے سے آنے اور جانے والے مسافروں کیلئے نئی خدمات کا اعلان

پرائم کلاس ، میٹ اینڈ گریٹ ارائیول ، میٹ اینڈ گریٹ ڈیپارچر، آرائیول اینڈ ڈیپارچر فاسٹ ٹریک اور بہت کچھ شامل ہے۔ عمان ایئر

Sajid Ali ساجد علی پیر 8 نومبر 2021 15:20

عمان ؛ مسقط بین الاقوامی ہوائی اڈے سے آنے اور جانے والے مسافروں کیلئے نئی خدمات کا اعلان
مسقط ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 08 نومبر 2021ء ) عمان ایئر نے مسقط بین الاقوامی ہوائی اڈے کے ذریعے آنے اور جانے والے مسافروں کے لیے نئی خدمات کا اعلان کردیا ۔ ٹائمز آف عمان کے مطابق ایئر لائن کی طرف سے آن لائن جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ایک بلند سفری تجربے کے لیے ہمیں مسقط انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر آنے اور روانہ ہونے والے تمام ٹکٹ کلاس کے مسافروں کے لیے نئی خدمات کی پیشکش میں TAV OS کے ساتھ شراکت کرتے ہوئے خوشی ہو رہی ہے ۔

بتایا گیا ہے کہ نئی سروسز عمان ایئر کی ویب سائٹ سے آن لائن خریداری کے لیے دستیاب ہیں اور ان میں پرائم کلاس ، میٹ اینڈ گریٹ ارائیول ، میٹ اینڈ گریٹ ڈیپارچر، آرائیول اینڈ ڈیپارچر فاسٹ ٹریک اور بہت کچھ شامل ہے ۔ خیال رہے کہ حال ہی میں خلیجی سلطنت عمان کے صحار ایئرپورٹ نے بھی بین الاقوامی پروازیں دوبارہ شروع کر دیں ، عمان ایئر پورٹس نے اعلان کیا ہے کہ صحار ایئرپورٹ نے عالمی وباء کورونا وائرس کی وجہ سے آپریشن میں طویل وقفے کے بعد اپنی بین الاقوامی پروازوں کا دوبارہ آغاز کردیا ہے اور ابتدائی طور پر پیر ، بدھ اور جمعہ کو ہفتہ وار تین پروازوں کے ساتھ ایئر عربیہ کی پروازیں چلاتے ہوئے بین الاقوامی آپریشن کی دوبارہ شروعات کی گئی ہے ، دیگر معروف کیریئرز کے ذریعے نئی براہ راست پروازوں کے لیے ایئرلائنوں کو اپنی طرف متوجہ کرنے کی کوششیں جاری ہیں جس کا اعلان جلد کردیا جائے گا ۔

(جاری ہے)

اپنے ایک بیان میں صحار ایئرپورٹ کے منیجر علی بن ثانی الخفی نے کہا کہ ہم تمام مقامی اور بین الاقوامی ایئرلائنز کو خوش آمدید کہنے کے لیے پوری طرح تیار ہیں ، صحار ہوائی اڈے کے تمام صارفین کے لیے محفوظ اور ہموار سفری تجربہ کو یقینی بنایا جائے گا ، صحت اور بین الاقوامی سطح پر منظور شدہ سفری پروٹوکولز اور معیارات کا خاص خیال رکھیں گے ، اس کی روشنی میں مجاز حکام کی جانب سے نافذ کردہ احتیاطی تدابیر پر عمل درآمد بھی جاری رکھا جائےگا۔

متعلقہ عنوان :

مسقط میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments