کورونا کی نئی قسم سامنے آنے پر قطر نے سفری ہدایت نامہ میں تبدیلی کردی

ملک کی 'ٹریول اینڈ ریٹرن پالیسی' کی اپ ڈیٹ جاری ‘ گرین اور ریڈ لسٹوں کو گروپ اے اور بی میں تقسیم کردیا گیا

Sajid Ali ساجد علی پیر 29 نومبر 2021 15:15

کورونا کی نئی قسم سامنے آنے پر قطر نے سفری ہدایت نامہ میں تبدیلی کردی
دوحہ ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 29 نومبر 2021ء ) خلیجی ملک قطر نے دنیا میں کورونا کی نئی قسم سامنے آنے پر سفری ہدایت نامے میں تبدیلی کردی ، ملک کی 'ٹریول اینڈ ریٹرن پالیسی' کی اپ ڈیٹ جاری ‘ گرین اور ریڈ لسٹوں کو گروپ اے اور بی میں تقسیم کردیا گیا ۔ دوحہ نیوز کے مطابق قطر میں ابھی تک نئے کورونا وائرس ویرینٹ Omicron کا کوئی کیس سامنے نہیں آیا لیکن صحت کے حکام نے دنیا بھر میں نئے تغیر پر خدشات بڑھنے کی وجہ سے پیر کو قطر کے ایم او پی ایچ نے کوویڈ 19 کی تازہ ترین پیشرفت کے مطابق ملک کی 'ٹریول اینڈ ریٹرن پالیسی' کو اپ ڈیٹ جاری کیا۔

بتایا گیا ہے کہ نئی ہدایات میں گرین اور ریڈ لسٹوں کو گروپ اے اور بی میں تقسیم کیا گیا ہے ، گروپ اے میں قطر کے تمام شہری اور رہائشی شامل ہیں ، جنہیں قطر کے اندر یا باہر وزارت صحت عامہ کی طرف سے منظور شدہ ویکسین کے ذریعے مکمل طور پر ویکسین لگائی گئی ہے یا جن کے پاس مشروط طور پر منظور شدہ ویکسین ہے، یا جو دوحہ کے اندر کورونا سے صحت یاب ہوئے ہیں اور ان کی بحالی صحت کو کم از کم 14 دن گزر چکے ہیں۔

(جاری ہے)

سبز یا سرخ رنگ میں درج ممالک کے مسافروں کو قطر پہنچنے پر قرنطینہ سے اس شرط پر مستثنیٰ قرار دیا جائے گا کہ وہ وزارت کی سرکاری ویب سائٹ پر درج ٹیسٹ پالیسی کی پابندی کریں گے ، گرین لسٹڈ ممالک کے مسافروں کے لیے قطر پہنچنے پر سات دن کے لیے گھر میں قرنطینہ ضروری ہے ریڈ لسٹڈ ممالک سے آنے والے افراد کو بھی پہنچنے پر سات دن کے لیے ہوم قرنطینہ میں رکھا جائے گا ۔

گرین لسٹڈ ممالک سے آنے والے جی سی سی کے شہری قطر کے اندر یا باہر MoPH کی طرف سے منظور شدہ ویکسین کے ذریعے، یا جن کے پاس مشروط طور پر منظور شدہ ویکسین ہے، یا جنہیں GCC ممالک کے اندر کورونا سے صحت یاب ہوئے 14 دن گزر چکے ہیں ، بحالی کی صورت میں بشرطیکہ منظور شدہ ویکسین کی ایک خوراک دی گئی ہو ، قرنطینہ سے مستثنیٰ ہیں تاہم ریڈ لسٹڈ ممالک سے آنے والوں کو قطر پہنچنے پر دو دن کے لیے ہوٹل قرنطینہ میں رکھا جائے گا۔

جہاں تک GCC مسافروں کا تعلق ہے جو مکمل طور پر ویکسین نہیں لگائے گئے یا ویکسین کے لیے نااہل ہیں یا جنہوں نے ویکسین کی مطلوبہ خوراکیں مکمل نہیں کی ہیں ، انہیں قطر پہنچنے پر سات دن کے لیے ہوٹل میں قرنطینہ میں رہنا ہوگا ، قطر میں مقیم فرسٹ ڈگری رشتہ داروں کے ساتھ رہنے کے لیے آنے والے جی سی سی کے شہری (غیر رہائشی) قطر پہنچنے پر سات دن کے لیے ہوم قرنطینہ کے تابع ہیں بشرطیکہ وہ تعلقات کا ثبوت اور قومی پتے کا ڈیٹا پیش کریں۔

گروپ بی پہلے سے منظور شدہ اور آن ارائیول ویزا کے ساتھ دوحہ آنے والوں کے لیے قرنطینہ اور ٹیسٹ پالیسی کی فہرست دیتا ہے ، اس زمرے میں گرین لسٹ کے تحت آنے والے ممالک کے مسافروں اور MoPH سے منظور شدہ ویکسین کے ذریعے مکمل طور پر ویکسین لگوائی گئی ہے یا مشروط طور پر منظور شدہ ویکسین میں سے ایک وصول کی گئی ہے انہیں قرنطینہ سے مستثنیٰ ہے لیکن ریڈ لسٹ والے ممالک سے آنے والوں کے لیے ہوٹل پہنچنے پر دو دن کے لیے قرنطینہ ضروری ہے۔

دوسری طرف سبز اور سرخ دونوں ممالک کے ایسے مسافر جنہوں نے مکمل طور پر ویکسین نہیں لگائی یا جنہوں نے ویکسین کی مطلوبہ خوراک مکمل نہیں کی ، وہ عمر سے قطع نظر ملک پہنچنے پر سات دن کے لیے ہوٹل کے قرنطینہ کے تابع ہوں گے جب کہ قطر میں مقیم اپنے فرسٹ ڈگری رشتہ داروں میں سے کسی سے ملنے کے لیے پہلے سے جاری کردہ فیملی ویزا کے حامل افراد کو سات دن تک گھر میں قرنطینہ میں رکھا جائے گا بشرطیکہ وہ رشتے کا ثبوت اور قومی پتے کا ڈیٹا پیش کریں۔

دوحہ میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments