حج کے دوران سیاسی یا فرقہ ورانہ نعرے بازی برداشت نہیں کی جائے گی: سعودی کابینہ کا انتباہ

سعودی کابینہ کے اعلان کے مطابق نعرے لگانے والوں کے خلاف مقررہ قوانین و ضوابط کے مطابق کارروائی ہو گی

Muhammad Irfan محمد عرفان بدھ جولائی 11:18

حج کے دوران سیاسی یا فرقہ ورانہ نعرے بازی برداشت نہیں کی جائے گی: سعودی ..
جدہ(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 10جولائی 2019ء) گزشتہ روز سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی جدہ میں واقع رہائش گاہ قصر السلام میں کابینہ کا اجلاس منعقد ہوا جس میں حج کے حوالے سے اہم فیصلے لیے گئے اور انتظامات کا جائزہ بھی لیا گیا۔ اس موقع پر کابینہ کی جانب سے انتباہ کیا گیا ہے کہ حج سیزن کے موقع پر سیاسی یا فرقہ ورانہ نعرے بازی کسی صورت بھی برداشت نہیں کی جائے گی۔

اس نوعیت کے نعرے لگانے والوں کے خلاف مقررہ قوانین و ضوابط کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔ اس موقع پر کابینہ نے حج پر آنے والے سے اپیل کی کہ وہ مقدس مقامات کے رُوح پرور ماحول اور تقدیس کا احترام کریں اور ایسا کوئی کام نہ کریں جس سے حج کا پاک ماحول متاثر ہو۔ خصوصاً سیاسی اور فرقہ ورانہ نعرے بازی سے گریز کیا جائے کیونکہ اس سے نقصِ امن کا خطرہ بن جاتا ہے۔

(جاری ہے)

کابینہ کے مطابق بعض طاقتیں حج سیزن کے دوران ناجائز فائدہ اُٹھانے کے لیے سیاسی نعرے بازی یا فرقہ ورانہ ہنگامے کروانے کی تاک میں لگی رہتی ہیں۔ جس سے سعودی مملکت کا تشخص بگاڑنے اور اس کے بارے میں منفی پراپیگنڈہ کرنے کا موقع مِلے۔ اس موقع پر شاہ سلمان نے تمام سرکاری اور نجی اداروں کو ہدایت کی کہ وہ حج پر آنے والے عازمین کو زیادہ سے زیادہ آسانیاں فراہم کریں۔ امن و امان کو یقینی بنائیں اور ہوائی اڈوں، بندرگاہوں اور زمینی سرحدی چوکیوں پر کڑی نگرانی کی جائے۔ عازمین اپنے مقدس فرائض کی ادائیگی کے لیے آتے ہیں اُن کے آرام و آسائش کا خیال رکھنا سعودی مملکت اور اداروں کی اولین ذمہ داری بنتی ہے جسے ہر سال کی طرح اس بار بھی بہترین انداز سے نبھایا جائے گا۔

جدہ میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments