پاکستانی بزرگ نے ہمت و حوصلے کی نئی داستان رقم کر دی

ایک پیر سے محروم ہونے کے باوجود حج کرنے کے لیے سعودی عرب پہنچ گئے

Muhammad Irfan محمد عرفان منگل اگست 11:57

پاکستانی بزرگ نے ہمت و حوصلے کی نئی داستان رقم کر دی
مکّہ مکرمہ(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 6اگست 2019ء) حج کی سعادت حاصل کرنا ہر مسلمان کی زندگی کا سب سے بڑا خواب ہوتا ہے۔ بہت خوش نصیب ہوتے ہیں وہ لوگ، جنہیں زندگی میں یہ سعادت ایک بار بھی حاصل ہو جاتی ہے۔ حج کی ادائیگی کے لیے ہر امیر غریب، جوان، بوڑھا، بچہ، خاتون، مرد، بیمار اور تندرست حرم میں موجود ہوتا ہے۔ ایک ایسا ہی باہمت اور حوصلہ شخص پاکستان سے بھی آیا ہے۔

العربیہ نیٹ کے مطابق پاکستان سے آنے والے 68 سالہ محمد میمن ایک پیر سے معذور ہیں مگر اُن کی ایمان سے محبت و حرارت اُنہیں یہاں کھینچ لائی ہے۔ انہوں نے مکّہ مکرمہ پہنچنے پر العربیہ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’زندگی عزم و ارادے سے چلتی ہے۔ہم امید کے سہارے ہی زندہ رہ سکتے ہیں۔ زندہ رہنے کیلئے چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے‘۔

(جاری ہے)

’میں یہاں آکر خوش ہوں ،مناسک حج کبھی بیساکھی کے سہارے انجام دوں گا اور کبھی و یل چیئر سے سفر کروں گا۔

میری بیٹی ہمراہ آئی ہوئی ہے، وہ میری مدد کرے گی‘۔محمد میمن نے بتایا کہ وہ ٹرین کے ایک حادثے کی نتیجے میں 50 برس قبل اپنی ایک ٹانگ سے محروم ہو گئے تھے۔ مگر انہوں نے اپنی اس معذوری کو مایوسی میں نہیں بدلنے دیا۔ وہ انتہائی خوش مزاج شخص ہیں جو لوگوں سے ہر وقت ہنسی مذاق میں مصروف رہتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ میں یہاں آکر خود کو بڑا مطمئن اور پُرسکون محسوس کر رہا ہوں۔ میں نے اپنے حج کے خواب کی تکمیل کے لیے کئی سال پیسے جمع کی۔ اب وقوف عرفہ کے لیے ایک ایک پل گِن رہا ہوں۔ انہوں نے اپنی ہمت و حوصلے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ جمرات کی رمی بھی خود کریں گے۔ اور باقی مناسکِ حج بھی اپنے بل بوتے پر ہی ادا کریں گے۔

متعلقہ عنوان :

مکہ مکرمہ میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments