”اس بار حج کو کامیاب بنانے میں آرٹیفیشل انٹیلی جنس نے اہم کردار ادا کیا ہے“

امام کعبہ اور حرمین شریفین کی انتظامی امور کی کمیٹی کے سربراہ الشیخ ڈاکٹر عبدالرحمن السدیس نے کہا کہ موجودہ حج کو ’اسمارٹ حج ‘ کا نام دیا جائے تو بے جا نہ ہوگا

Muhammad Irfan محمد عرفان ہفتہ 24 جولائی 2021 14:04

”اس بار حج کو کامیاب بنانے میں آرٹیفیشل انٹیلی جنس نے اہم کردار ادا ..
مکہ مکرمہ(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔24 جولائی 2021ء ) حج کا مرحلہ بخیر و عافیت گزر گیا ۔ اگرچہ اس بار کورونا وبا کے پھیلاؤ کو روکنے کی خاطر صرف ساٹھ ہزار افراد کو حج کے لیے اجازت نامے جاری ہوئے تھے، تاہم ان ہزاروں افراد کے درمیان سماجی فاصلے کو ہر موقع پر ممکن بنانا اور انہیں مناسک حج میں بہت زیادہ سہولت فراہم کرنا ایک چیلنج بھرا فریضہ تھا جسے بخوبی انجام دیا گیا ہے۔

حج کے اختتام کے بعد امام کعبہ اور حرمین شریفین کی انتظامی کمیٹی کے سربراہِ اعلیٰ الشیخ ڈاکٹر عبدالرحمن السدیس کا اہم بیان آ گیا ہے ۔ انہوں نے کہا ہے کہ جدید ٹیکنالوجی نے حج کو کامیاب بنانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔العربیہ ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر السدیس نے کہا کہ موجودہ حج کو ’اسمارٹ حج‘ کا نام دیا جائے تو یہ بے جا نہیں ہوگا، کیونکہ رواں سال حج کے موقعے پر زیادہ سیزیادہ مصنوعی ذہانت سے فائدہ اٹھایا گیا۔

(جاری ہے)

ڈیجیٹل آلات کی مدد سے حج کو کامیاب بنانے میں مدد ملی۔ان کا کہنا تھا کہ حج کے موقعے پر اسمارٹ آلات کا استعمال وڑن 2030 کے اہداف کا حصہ ہے۔ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر عبدالرحمان السدیس نے کہا کہ رواں حج سیزن کے موقعے پر ہماری حکومت کی طرف سے حج سروسز کو جدید خطوط پر منتقل کرنے کی خصوصی ہدایت موجود تھی۔ مسجد حرام میں روبوٹ مشینوں کا استعمال کیاگیا۔

روبوٹ سے اسپرے کیا گیا۔ روبوٹ کی مدد سے حجاج کرام میں آب زم زم تقسیم کیا گیا۔ اس کے علاوہ جدید آلات کی مدد سے خطبہ حج کو 10 عالمی زبانوں میں ترجمے کے ساتھ پیش کیا گیا۔ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر السدیس نے کہا کہ صدارت عامہ برائے حرمین حج کو کامیاب بنانے کے لیے سروسز فراہم کرنے والے حکومتی نیٹ ورک میں شامل ہے۔امور حرمین نے وزارت صحت، وزارت حج وعمرہ، وزارت مذہبی امور اور سیکیورٹی اداروں کے ساتھ مل کر کام کیا ہے۔

مکہ مکرمہ میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments