ربیع الاول کے بابرکت مہینے میں عمرہ کرنے کے خواہشمند افراد کیلئے خوشخبری

جمعرات 14 اکتوبر سے پیر 18 اکتوبر تک مسجد الحرام کے زائرین کی تعداد میں اضافہ متوقع ہے ، انتظامیہ نے زائرین کی اضافی تعداد کے استقبال کے لیے تیاریاں مکمل کرلیں

Sajid Ali ساجد علی جمعرات 14 اکتوبر 2021 17:27

ربیع الاول کے بابرکت مہینے میں عمرہ کرنے کے خواہشمند افراد کیلئے خوشخبری
مکہ مکرمہ ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 14 اکتوبر 2021ء ) ربیع الاول کے بابرکت مہینے میں عمرہ کرنے کے خواہشمند افراد کو خوشخبری سنادی گئی۔ عرب میڈیا کے مطابق مسجد الحرام انتظامیہ نے زائرین کی اضافی تعداد کے استقبال کے لیے تیاریاں مکمل کرلی ہیں ، اس ضمن میں انتظامیہ کی جانب سے کہا گیا ہے کہ آج جمعرات سے پیر تک مسجد الحرام کے زائرین کی تعداد میں اضافہ متوقع ہے ، جس کے پیش نظر زائرین کی خدمت کے لیے 500 کارکنوں کا بھی اضافہ کیا گیا ہے ، اسی طرح صفائی کے عملے کی تعداد بھی بڑھائی گئی ہے ، جب کہ مطاف اور مسعی میں بھی اضافی ٹریک موجود ہیں تاہم اس دوران زائرین سے اپیل ہے کہ وہ مسجد الحرام میں ایس او پیز کا لازمی خیال رکھیں۔

علاوہ ازیں مسجدالحرام میں مناسکِ عمرہ اور نمازیں ادا کرنے اورمدینہ منورہ میں مسجد نبوی صلی اللہ علیہ وسلم میں داخلے کے اجازت ناموں کے اجرا پرنئی پابندی عائد کی گئی ہے ، اب ان دونوں مقدس مقامات میں صرف ان ہی عازمین اور زائرین کو داخل ہونے کی اجازت دی جائے گی جنہوں نے مملکت میں منظورشدہ کرونا وائرس کی کسی ویکسین کی دونوں خوراکیں لگوا رکھی ہیں اورجن لوگوں کو ویکسین لگوانے سے مستثنیٰ قراردیا گیا ہے، ان کے نام وزارت صحت کی توکلنا ایپلی کیشن پر ظاہر ہونے چاہئیں۔

(جاری ہے)

وزارت نے واضح کیا کہ جن لوگوں نے پہلے ہی عمرے کے لیے اپنا وقت محفوظ کرالیا ہے انہیں مکہ یا مدینہ میں عمرہ ، نماز یا مناسک ادا کرنے کا اجازت نامہ مل چکا ہے لیکن انہوں نے ابھی تک ویکسین کی دونوں خوراکیں نہیں لگوائی ہیں تو انہیں اپنے اجازت کی تنسیخ سے بچنے کے لیے مقررہ تاریخ سے 48 گھنٹے پہلے اپنی دوسری خوراک لگوانا ہوگی۔ وزارت نے کہا کہ سعودی عرب میں وبائی امراض کی صورت حال میں پیش رفت کے مطابق وبا سے متعلق تمام احتیاطی اورحفاظتی اقدامات کے جاتے ہیں اور یہ مملکت کی پبلک ہیلتھ اتھارٹی ( وقایا ) کی جانب سے مسلسل تشخیص سے مشروط ہیں۔

مکہ مکرمہ میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments