مدینہ میں 20 پاکستانی 90 لاکھ ریال سے زائد مالیت کی کیبل چوری کرنے پر گرفتار

ملزمان ڈکیتی کی واردارتوں کے دوران چوکیداروں پر تشدد بھی کرتے تھے، اپنے ہی ایک ساتھی کو بھی قتل کر چکے ہیں

Muhammad Irfan محمد عرفان بدھ نومبر 11:20

مدینہ میں 20 پاکستانی 90 لاکھ ریال سے زائد مالیت کی کیبل چوری کرنے پر ..
مدینہ منورہ (اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 6 نومبر 2019ء) مدینہ منورہ پولیس کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ سعودی مملکت کے مختلف علاقوں میں چوری اور ڈکیتی کی متعدد وارداتوں میں ملوث 20 پاکستانی گرفتار کیے گئے ہیں جو مجموعی طور پر 90 لاکھ 70 ہزار مالیت کی کیبل چوری کر چکے ہیں۔ یہ گینگ ہائی وولٹیج کیبل چوری کرتا تھا، جسے فروخت کرنے پر اُنہیں مناسب دام مِل جاتے تھے۔

سبق ویب سائٹ سے بات کرتے ہوئے مدینہ پولیس کے ترجمان میجر حُسین القحطانی نے بتایا ہے کہ متعدد شہروں کی پولیس اس پاکستانی ڈکیت گروہ کی تلاش میں تھی۔ یہ گروہ حکومتی پراجیکٹس کی سائٹس سے بھی کیبل چوری کرتا تھا، اس کے علاوہ نجی پراجیکٹس سائٹس سے بھی لاکھوں ریال کی کیبل چوری کر چکا تھا۔ یہ گروہ وارداتوں کے دوران وہاں موجود چوکیداروں اور سیکیورٹی گارڈز پر بھی حملے کرتا تھا اور انہیں رسیوں سے باندھ کر تشدد کرتا تھا۔

(جاری ہے)

اس پاکستانی گینگ نے مدینہ کے علاوہ ینبع، مکہ مکرمہ، جدہ، طائف اور حائل میں مجموعی طور پر 21وارداتیں انجام دی تھیں۔ یہ ڈکیت گینگ اس قدر خوفناک تھا کہ انہوں نے لُوٹی گئی رقم کی تقسیم کے معاملے پر اپنے ہی ایک ساتھ کوقتل کر نے کے بعد اس کی لاش جلا کر دفن کر دی تھی۔ ملزمان کی عمریں 30 سے 40 سال کے درمیان بتائی جا رہی ہیں۔ یہ گروہ اپنی کارروائی کرنے کے بعد رُوپوش ہو جاتا تھا۔

پولیس کے لیے دردِ سر بننے اس گینگ کو بالآخر گرفتار ہی کر لیا گیا۔ اس کارروائی میں متعدد شہروں کی پولیس نے حصہ لیا۔ ملزمان کے قبضے سے گرفتاری کے وقت اسلحہ بھی برآمد ہوا۔ تمام گرفتار ملزمان نے تفتیش کے دوران چوری ڈکیتی کی وارداتوں میں ملوث ہونے کا اعتراف کر لیا ہے۔ ملزمان کو چند روز بعد استغاثہ کی جانب سے عدالت میں پیش کیا جائے گا ، جہاں ان پر چوری اور ڈکیتی، چوکیداروں کی مار پیٹ کے علاوہ اپنے ہی ساتھی کو بے رحمی سے قتل کرنے کے الزامات کے تحت مقدمہ چلایا جائے گا۔

مدینہ منورہ میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments