سعودی عرب میں 23 لاکھ سے زائد غیر قانونی تارکین گرفتار

یہ غیر مُلکی اقامہ، لیبر قوانین اور دراندازی کی کوشش کے دوران گرفتار ہوئے

Muhammad Irfan محمد عرفان منگل جنوری 11:49

سعودی عرب میں 23 لاکھ سے زائد غیر قانونی تارکین گرفتار
ریاض(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔8 جنوری 2019ء) گزشتہ سال نومبر 2017ء میں غیر قانونی تارکین وطن کے خلاف آپریشن شروع کیا گیا۔ جوازات کے مطابق 26صفر 1439ھ سے لیکر 27ربیع الثانی 1440ھ تک اس آپریشن کے نتیجے میں سیکیورٹی اہلکاروں نے اب تک23لاکھ 76 ہزار دو سو پندرہ افراد گرفتار کر لیے ہیں۔یہ افراد اقامہ، لیبر قوانین اور سرحدی سلامتی کی خلاف ورزی کی بناء پر گرفتار کیے گئے۔

ان گرفتار شدگان میں سے 1846252اقامہ ، 364636 محنت قوانین جبکہ 39088سعودی سرحدی علاقوں سے مملکت میں غیر قانونی طور پر داخل ہونے کی کوشش کے دوران گرفتار ہوئے۔ جن میں سے 51فیصد یمنی، 46فیصد ایتھوپین اور 3فیصد دیگر ممالک سے تعلق رکھتے ہیں۔ اس کے علاوہ 1802 کے قریب افراد سعودی عرب سے فرار ہونے کی کوشش کے دوران پکڑے گئے۔

(جاری ہے)

اقامہ ، قانونِ محنت اور سرحدی سلامتی کی خلاف ورزی کے مرتکب افراد کو رہائش اور ٹرانسپورٹ کی سہولتیں دینے اور اُنہیں پناہ دینے کے الزام میں 3200 سے زائد مقامی افراد بھی گرفتار کیے گئے ہیں۔

حکام کے مطابق گرفتار کیے گئے 23 لاکھ 76ہزار افراد میں سے اب تک تقریباً 6 لاکھ 9 ہزار سے زائد غیر قانونی تارکین وطن کو ڈی پورٹ کیا جا چکا ہے۔جبکہ غیر قانونی تارکین کو سہولت فراہم کرنے والے 962 شہریوں کو بھی گرفتار کیا گیا۔ اقامہ و لیبر قوانین کی خلا ف ورزی پر 369648 افراد کو قانونی تقاضوں کے مطابق سزا سُنائی گئی ہے۔ ’غیر قانونی تارکین وطن سے پاک مملکت‘ کے نام سے شروع کی گئی اس مہم میں 19 سرکاری اور نجی سیکیورٹی ایجنسیز حصّہ لے رہی ہیں، جن میں وزارت محنت و سماجی بہبود کے علاوہ محکمہ جوازات بھی شامل ہے۔

متعلقہ عنوان :

ریاض میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments