’بیوی پر بدکاری کا الزام لگانے والا بدترین مجرم ہے‘

معروف سعودی عالم شیخ ڈاکٹر عبداللہ المطلق کا فتویٰ

Muhammad Irfan محمد عرفان منگل فروری 16:58

’بیوی پر بدکاری کا الزام لگانے والا بدترین مجرم ہے‘
ریاض(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔5فروری 2019ء) معروف سعودی عالم شیخ ڈاکٹر عبداللہ المطلق نے خبردار کیا ہے کہ کوئی بھی شخص بیوی پر بدکاری کا الزام نہ لگائے اور نہ ہی اپنے پیدا کیے بچوں کو اپنا باپ تسلیم کرنے سے انکار کرے۔ ایسا کرنے والا شریعت کا بھی گناہ گار ہے اور سماج کا بھی مجرم ہے۔ شیخ المطلق نے توجہ دی کہ اگر کسی شخص کو مکمل طور پر یقین ہو جائے کہ اُس کی بیوی بے وفائی میں ملوث ہے اور کسی غیر مرد کے ساتھ غلط کاری کی راہ پر چل پڑی ہے تو اس کے لیے اسلامی شریعت کے مطابق ’’اللعان‘‘ کا طریقہ اختیار کرنا ہو گا۔

اللعان سے مراد اسلامی شریعت کا یہ حکم ہے کہ اگر کسی شوہر کی بیوی گمراہی کے راستے پر چل پڑی ہے اور شوہر کے سمجھانے کے باوجود راہِ راست پر نہیں آ رہی تو پھر شوہر اپنی بیوی کو طلاق دے کر اُس سے نجات حاصل کر لے۔

(جاری ہے)

شیخ المطلق نے یہ باتیں سعودی ٹی وی چینل پر فتاویٰ پروگرام میں ایک سوال کے جواب میں کہی۔ ایک شخص نے اُن سے سوال کیا تھا کہ اگر کوئی شخص اپنی بیوی پر بدکاری کا الزام لگائے اور اپنی سگی بیٹی کو اپنی اولاد سمجھنے کی معاملے میں شک و شبہے کا اظہار کرے تو شریعت اس بارے میں کیا کہتی ہے۔

اس پر المطلق نے کہا کہ سب سے پہلے تو اسے اپنا ڈی این اے کروا کر حقیقت کا پتا چلانا چاہیے کیونکہ میڈیکل سائنس کے مطابق ڈی این اے ٹیسٹ کے نتائج سو فیصد درست ہوتے ہیں۔ بلاوجہ ذہن میں شکوک و شبہات پالنا نیک مردوں کا وتیرہ نہیں۔ بیوی کو اذیت پہنچانے سے گریز کرنا چاہیے۔ اپنی جیون ساتھی پر الزام تراشی کرنا کسی بھی صورت میں جائز نہیں ہے۔

متعلقہ عنوان :

ریاض میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments