ریاض: چھوٹے اداروں کو 9 ویزے فوری طور پر جاری کیے جائیں گے

اس اقدام کا مقصدچھوٹے اور درمیانے اداروں کو معاشی بحران سے نکالنا ہے

Muhammad Irfan محمد عرفان بدھ فروری 15:48

ریاض: چھوٹے اداروں کو 9 ویزے فوری طور پر جاری کیے جائیں گے
ریاض(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔6فروری 2019ء) وزارت محنت و سماجی بہبود نے اعلان کیا ہے کہ چھوٹے اور درمیانے اداروں کو 9 قسم کے ویزے فوری طور پر جاری کیے جائیں گے۔ ان 9 سہولتوں کی فراہمی کا مقصد یہ ہے کہ وہ اپنے پیروں پر کھڑے ہو جائیں اور معاشی بحران سے باہر آ کر مُلکی معیشت کی ترقی میں اہم کردار ادا کرنے کے ساتھ ساتھ مارکیٹ میں اپنا مقام بھی بنا سکیں۔

وزارت محنت اور چھوٹے اور درمیانے درجوں کی اتھارٹی ’منشات‘ کے درمیان گزشتہ روز اس حوالے سے ایک معاہدہ طے پایا ہے۔ معاہدے پر دستخط کے حوالے سے منعقدہ تقریب میں وزیر تجارت و سرمایہ کاری ڈاکٹر ماجد القصبی وزیر محنت احمد الراجحی اور وزیر تعلیم ڈاکٹر حمد الشیخ نے بھی شرکت کی۔ وزارت محنت کی جانب سے معاہدے پر نائب وزیر ڈاکٹر عبداللہ ابو ثنین جبکہ منشات کی جانب سے اس کے گورنر صالح الرشید نے دستخط کئے۔

(جاری ہے)

وزارت محنت کے مطابق اس معاہدے کا مقصد معاہدے کا مقصد چھوٹے اور درمیانے سائز کے اداروں کی مدد کرنا ہے۔ اس کے علاوہ مقامی شہریوں کو سرمایہ کاری کی طرف راغب کرنا ہے تاکہ اُن کی زیادہ سے زیادہ شمولیت سے قومی پیداوار میں خاطر خواہ اضافہ ہو سکے۔ چھوٹے اور درمیانے درجے کے اداروں کو دی جانے والی سہولتوں میں سے پہلی سہولت یہ ہے کہ ان اداروں کے مالکان کو 9 ویزے فوری دیئے جاسکیں گے۔

دوسری سہولت کے تحت ان اداروں کو ایک برس تک نطاقات پروگرام میں رجسٹریشن سے چھُوٹ حاصل ہو گی۔ تیسری سہولت یہ ہو گی کہ ’مراس‘ کے ذریعے ویزوں کا بیلنس طلب کیا جا سکے گا۔ ان اداروں میں بھرتی کیے جانے والے سعودی ملازمین کو فوری طور پر نطامات کے زمرے میں شمار کیا جائے گا۔ ان سعودی ملازمین کو ’طاقات‘ ویب سائٹ پر اشتہار سے مستثنیٰ قرر دیا جائے گا۔ اس پروگرام میں سماجی بہبود فنڈ اور افرادی قوت کے فروغ کے فنڈ سے بھی امداد دی جائے گی۔

متعلقہ عنوان :

ریاض میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments