سعودی لڑکی کرفیو کی خلاف ورزی کرتے ہوئے باہر نکل آئی

اپنی ویڈیو میں کورونا کو چیلنج دینے والی اور حکومتی احکامات کی خلاف ورزی کرنے والی خاتون کو گرفتار کر لیا گیا

Muhammad Irfan محمد عرفان منگل مارچ 12:49

سعودی لڑکی کرفیو کی خلاف ورزی کرتے ہوئے باہر نکل آئی
ریاض(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔24مارچ 2020ء) دُنیا بھر میں اس وقت کورونا نے خوف و ہراس پھیلا رکھا ہے۔ سعودی مملکت میں بھی کروڑوں افراد دن رات اپنی اور اپنے پیاروں کی صحت اور زندگی کے تحفظ کی دعائیں مانگ رہے ہیں۔ مگر کچھ بے حس لوگ کورونا اور حکومتی اقدامات اور احکامات کا ٹھٹھا اُڑانے میں مصروف ہیں۔ ایک سعودی خاتون کی سوشل میڈیا پر ویڈیو وائرل ہوئی ہے جو مملکت میں عائد جزوی کرفیو کی ذرا بھی پروا نہ کرتے ہوئے گاڑی لے کر سڑک پر آ گئی اوراپنی ویڈیو بنا کر لوگوں سے کہنے لگی کہ سعودی حکام نے کرفیو کی خلاف ورزی پر ہزاروں درہم کا جرمانہ لگا دیا ہے۔

یہ موسم بہار کے دن ہیں، ان ایام میں کوئی بھلا خود کو کیسے گھر میں بند رکھ سکتا ہے۔ اگر باہر نہ نکلے توبہار کے خوبصورت نظاروں سے کیسے لطف اندوز ہوں گے، اس حسین موسم میں جابجا کھلنے والے پھولوں کا حُسن کیسے دیکھ پائیں گے۔

(جاری ہے)

بھلا کوئی کیسے گھروں سے نہ نکلیں۔چاہے لاکھوں ریال کا جرمانہ بھی بھرنا پڑے، ہم تو باہر آئیں گے۔ پھر یہ لڑکی تمسخر کے انداز میں کورونا کو مخاطب کر کے کہتی ہے ، آجاؤ ، وائرس آجاؤ، کوئی بات نہیں ہم بچ جائیں گے۔

اس ویڈیو کے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کی دیر تھی کہ ایک طوفان اُٹھ کھڑا ہوا۔لوگوں نے اس سعودی خاتون کی شدید مذمت کرتے ہوئے اس کی گرفتاری کا مطالبہ کیا۔ سعودی شہزادہ نایف بن خالد نے بھی اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر اس غیر ذمہ دار خاتون کی ویڈیو شیئر کرتے ہوئے کہا کہ حائل ریجن سے تعلق رکھنے والی اس خاتون کا نام اُم یزید الشماری ہے۔

یہ لڑکی کرفیو کے اوقات کی خلاف ورزی کرتے ہوئے باہر نکل آئی ، اس کا یہ اقدام سیکیورٹی فورسزکی اتھارٹی کو چیلنج کرنے کے مترادف ہے۔ اس خاتون کے خلاف سخت سے سخت ایکشن لیا جانا چاہیے۔ شہزادہ نایف بن خالد نے اس ویڈیو میں پبلک پراسیکیوشن اور سیکیورٹی اداروں کو بھی معاملے کا نوٹس لینے کا کہا۔ جس کے بعد اس خاتون کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ 

ریاض میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments