پاکستانیوں کی بڑی مشکل آسان، سعودیہ جانے کے خواہشمند شہریوں کو مملکت آنے کا حل بتادیا گیا

سعودی عرب آمد سے قبل 14 دن کسی دوسرے ملک میں قیام کریں، مملکت آنے سے کم از کم 72 گھنٹے قبل پی سی آر ٹیسٹ کرانا ہو گا ، سعودیہ آنے کے بعد مملکت میں لگائی جانے والی ویکسین کی ایک بوسٹرڈوز لگانی ہوگی

Sajid Ali ساجد علی منگل 21 ستمبر 2021 14:22

پاکستانیوں کی بڑی مشکل آسان، سعودیہ جانے کے خواہشمند شہریوں کو مملکت آنے کا حل بتادیا گیا
ریاض ( اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار ۔ 21 ستمبر 2021ء ) سعودی عرب جانے کے خواہشمند پاکستانی شہریوں کو مملکت آنے کا حل بتادیا گیا ، سعودی عرب آمد سے قبل 14 دن کسی دوسرے ملک میں قیام کریں، مملکت آنے سے کم از کم 72 گھنٹے قبل پی سی آر ٹیسٹ کرانا ہو گا ، سعودیہ عرب آنے کے بعد ایک بوسٹرڈوز لگانی ہوگی۔ اُردو نیوز کے مطابق جوازات پر ایک شخص کی جانب سے سوال کیا گیا ہے کہ وہ افراد جنہوں نے پاکستان میں ویکسین لگوائی ہے ان کے لیے سعودی عرب جانے کی شرائط کیا ہیں؟ اس کے جواب میں وضاحت کی گئی کہ ممنوعہ ممالک جہاں سے مسافروں کے براہ راست مملکت آنے پر پابندی ہے ، ایسے ملک سے آنے والے افراد مملکت آمد سے قبل 14 دن کسی دوسرے ملک میں قیام کریں ، وہاں سے ممکت آئیں تاہم آنے سے کم از کم 72 گھنٹے قبل پی سی آر ٹیسٹ کرانا ہو گا ، ایسے افراد جنہوں نے سعودی عرب میں لگائی جانے والی کورونا ویکسین نہیں لگوائی بلکہ ڈبلیو ایچ او سے منظور شدہ کو ئی بھی ویکسین لگوائی ہے اور وہ سعودی عرب میں نہیں لگائی جاتی تو انہیں مملکت آنے کے بعد ایک بوسٹرڈوز لگانی ہوگی۔

(جاری ہے)

جوازات نے مزید کہا کہ وہ افراد جنہوں نے سعودی عرب سے سفر کرنے سے قبل کورونا سے محفوظ رہنے کے لیے مقررہ و منظورشدہ ویکسین کی دونوں خوراکیں لی ہوئی ہیں اور توکلنا پر ان کا سٹیٹس امیون ہے وہ براہ راست مملکت آسکتے ہیں جب کہ وہ افراد جنہوں نے مقررہ ویکسین نہیں لگوائی اور وہ مسافروں کی آمد پر پابندی والے ممالک سے آنا چاہتے ہیں تو انہیں چاہیئے کہ وہ 14 دن کسی ایسے ملک میں گزارنے کے بعد مملکت آئیں جن پر پابندی عائد نہیں ہے تاہم انہیں مملکت آنے سے قبل پی سی آر ٹیسٹ کروانا ہو گا جو کہ مملکت آنے سے کم از کم 72 گھنٹے قبل ہونا چاہیئے ، مملکت آنے والے غیر ملکیوں کو چاہیے کہ وہ مملکت پہنچنے سے قبل ’قدوم‘ ایپ پر اپنا اندراج کرائیں جس کے ذریعے ویکسین اور قرنطینہ کے حوالے سے دیگر معاملات اپ ڈیٹ کرائے جاسکیں گے۔

یہاں قابل ذکر بات یہ ہے کہ سعودی عرب کی جانب سے مملکت میں فائزر، اسٹرازینیکا ، موڈرنا اور جانسن اینڈ جانسن کی ویکیسن کو منظور کیا گیا ہے تاہم چینی ویکسین سائنوفام اورسائنوویک جن افراد نے لگائی ہے انہیں چاہیئے کہ وہ مملکت آنے کے بعد فائزر، اسٹرازینیکا یا موڈرنا کی ایک بوسٹرخوراک لگوالیں۔

ریاض میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments