ابو ظہبی:شکّی خاوند نے بیوی پر تیزاب پھینک دیا، خاتون جاں بحق

ملزم نے خاتون سے اُس کے موبائل کا پاس ورڈ مانگا تھا، خاتون کے انکار پر اُس پر تیزاب پھینک دیا

Muhammad Irfan محمد عرفان جمعرات مئی 12:35

ابو ظہبی:شکّی خاوند نے بیوی پر تیزاب پھینک دیا، خاتون جاں بحق
ابو ظہبی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین،16 مئی 2019ء) ابوظہبی میں مقیم ایک شخص نے اپنی بیوی کے کردار کو مشکوک جانتے ہوئے اُس پر تیزاب پھینک دیا۔ جس سے خاتون زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہو گئی۔ ملزم کا تعلق ایک خلیجی ملک سے بتایا جاتا ہے۔ دونوں میاں بیوی 17 سالہ سے رشتہ ازدواج میں منسلک تھے اور اُن کے چھے بچے تھے۔ متوفی خاتون کے 16سالہ بیٹے نے بتایا کہ وقوعے کے روز اُن کا باپ جب گھر آیا تو اُس کے ہاتھ میں ایک کالے رنگ کا بیگ تھا۔

آتے ساتھ ہی اُس نے والدہ سے اُس کے فون کا پاس ورڈ پُوچھا۔ جب والدہ نے پاس ورڈ بتانے سے انکار کیا تو اُس نے اپنے پاس موجود بیگ میں سے تیزاب کی بوتل نکالی اور سارا تیزاب خاتون کے چہرے پر اُنڈیل دیا۔ اور خاتون کو انتہائی تکلیف کی حالت میں چھوڑ کر گھر سے فرار ہو گیا۔

(جاری ہے)

تیزاب گردی کے اس حملے کے دوران بچے بھی تیزاب کی چھینٹیں پڑنے سے زخمی ہوئے۔

خاتون اس حملے میں دم توڑ گئی۔ عدالت میں استغاثہ کی جانب سے الزام عائد کیا گیا کہ ملزم نے خاتون کو تیزاب سے جلا کر مارنے کا پہلے سے منصوبہ بنا رکھا تھا۔ یہ ایک سوچی سمجھی حرکت تھی۔ اس لیے ملزم کسی رُو رعایت کا مستحق نہیں۔ ملزم کے بارے میں مزید انکشاف ہوا کہ وہ نشے کا عادی تھا اور اس سے قبل بھی مختلف جرائم کے ارتکاب پر متعدد بار جیل بھُگت چُکا تھا۔

ملزم کو عدالت کی جانب سے عمر قید کی سزا سُنائی گئی تھی جس کے ردِعمل میں ملزم نے اعلیٰ عدالت میں اپیل دائر کرتے ہوئے یہ موقف اختیار کیا تھا کہ بچوں کی والدہ کی وفات کے بعد وہ اپنے بچوں کا واحد کفیل ہے، اس لیے اُس کی سزا ختم کی جائے تاکہ وہ اپنے بچوں کا سہارا بن سکے۔ تاہم عدالت نے اُس کے جُرم کی نوعیت دیکھتے ہوئے اُس کی بریت کی اپیل خارج کر دی اور ایسا کرنے کو اسلامی قانونِ سزا سے متصادم قرار دیا۔

ابو ظہبی میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments