یو اے ای؛ کورونا متاثرہ مریضوں میں نئے اینٹی وائرل طریقہ علاج کا کامیاب تجربہ

ابوظہبی کے محکمہ صحت کے تعاون سے سوترو ویماب کو ہنگامی بنیادوں پر کووڈ 19 کے متاثرین کے علاج میں کامیابی سے استعمال کیا گیا، علاج کو پانے والے مریضوں میں بہت کم وقت کے اندر مثبت صورتحال اور بہتری دیکھنے میں آئی۔ رپورٹ

Sajid Ali ساجد علی جمعہ 17 ستمبر 2021 12:19

یو اے ای؛ کورونا متاثرہ مریضوں میں نئے اینٹی وائرل طریقہ علاج کا کامیاب تجربہ
ابو ظہبی ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔ 16 ستمبر 2021ء ) متحدہ عرب امارات نے کورونا متاثرہ مریضوں میں نئے اینٹی وائرل طریقہ علاج کا کامیاب تجربہ کرلیا ، ابوظہبی کے محکمہ صحت کے تعاون سے سوترو ویماب کو ہنگامی بنیادوں پر کووڈ 19 کے متاثرین کے علاج میں کامیابی سے استعمال کیا گیا، علاج کو پانے والے مریضوں میں بہت کم وقت کے اندر مثبت صورتحال اور بہتری دیکھنے میں آئی۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق عالمی وباء کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کے علاج میں دنیا کے نئے اینٹی وائرل طریقہ علاج ’سوترو ویماب‘ کے استعمال کا کامیاب تجربہ متحدہ عرب امارات میں صحت عامہ کے سب سے بڑے نیٹ ورک ادارہ ابوظہبی ہیلتھ سروسز کمپنی صحۃ کی جانب سے کیا گیا۔ اس حوالے سے صحۃ کے چیف میڈکل آفیسر ڈاکٹر انور سلام نے بتایا کہ ان کے ادارے نے عالمی وباء سے نمٹنے میں موثر قومی ردعمل کے لیے کلیدی کردار ادا کیا اور اس کے علاج کی خاطر ملکی معاشرے میں بانی کے طور پر خدمات فراہم کی ہیں ، محکمہ صحت کے تعاون سے سوترو ویماب کو ہنگامی بنیادوں پر کووڈ 19 کے متاثرین کے علاج میں کامیابی سے استعمال کیا گیا ، اس علاج کو پانے والے مریضوں میں بہت کم وقت کے اندر مثبت صورتحال اور بہتری دیکھنے میں آئی۔

(جاری ہے)

رپورٹ سے معلوم ہوا ہے کہ امارات کے مقامی شہری سعید العامری کا سوترو ویماب سے کامیاب علاج کیا گیا ، جو کہ رواں سال کے آغاز پر عالمی وباء کا شکار ہوئے جس کے بعد انہیں شدید بخار ، سردرد اور جسم درد کا سامنا کرنا پڑا ، اس دوران وہ گھر پر قرنطینہ بھی رہے لیکن طبیعت میں بہتری نہ آنے پر انہیں شیخ خلیفہ میڈیکل سٹی کے انتہائی نگہداشت یونٹ منتقل کیا گیا جہاں ان کا علاج کیا گیا جس کے بعد ان کا بخار تیزی سے اترا اور مجموعی صحت کی حالت بھی بہتر ہونا شروع ہوگئی۔

یہاں قابل ذکر بات یہ ہے کہ سوترو ویماب کو عالمی سطح پر علاج معالجہ کی مایہ ناز کمپنی جی ایس کے نے تیار کیا ہے جو کہ امریکی ایف ڈی اے اور متحدہ عرب امارات کی وزارت صحت و تدارک کی جانب سے کورونا وائرس کے ہنگامی علاج کے لیے منظور شدہ طریقہ علاج ہے ، جس کی وجہ سے کورونا سے ہونے والی اموات میں 85 فیصد تک کمی دیکھنے میں آئی ہے جب کہ مریضوں کے صحتیاب ہونے بھی تیزی دیکھی گئی۔

ابو ظہبی میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments