اماراتی نوجوانوں نے 13 سالہ پاکستانی بچی سے جنسی زیادتی کر ڈالی

پولیس نے اس شرمناک معاملے میں ملوث اماراتی نوجوانوں کو گرفتار کر لیا

Muhammad Irfan محمد عرفان پیر مئی 11:04

اماراتی نوجوانوں نے 13 سالہ پاکستانی بچی سے جنسی زیادتی کر ڈالی
دُبئی( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین،13 مئی 2019ء) دو اماراتی طالب علموں نے پاکستان سے تعلق رکھنے والی کم سن لڑکی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ 13 سالہ پاکستانی بچی نے بتایا کہ وہ اپنے والدین کے ساتھ کچھ عرصہ سے دُبئی کے علاقے البرشا میں مقیم ہیں۔ 10 جنوری 2019ءکو دو اماراتی نوجوان جن کی عمریں بالترتیب 17 اور 18برس تھیں، اُن کی جانب سے اُس سے جنسی زیادتی کی گئی۔

لڑکی کے مطابق اُس نے دونوں نوجوانوں کی بہت منت سماجت کی کہ اُس کے ساتھ یہ شرمناک فعل نہ کیا جائے، مگر ان لڑکوں نے اُس کی ایک نہ سُنتے ہوئے اُسے درندگی کا نشانہ بنا ڈالا۔ متاثرہ پاکستانی لڑکی کی جانب سے اس واقعے کی رپورٹ البرشا کے پولیس اسٹیشن میں درج کرائی گئی۔ پولیس نے دونوں نوجوانوں کو گرفتار کر لیا۔

(جاری ہے)

عدالت میں مقدمے کی سماعت کے دوران ایک پولیس اہلکار نے بتایا کہ ملزمان میں سے ایک 17 سالہ لڑکے کو جب گرفتار کرنے کے بعد اُس سے تفتیش کی گئی تو اُس کا کہناتھا کہ اُس نے اور لڑکی نے باہمی رضا مندی سے جنسی فعل کیا تھا، اس معاملے میں کوئی زور زبردستی نہیں کی۔

اور ایسا صرف ایک بار ہوا ہے۔ جبکہ لڑکی کی جانب سے ایک اور ملزم پر بھی جنسی زیادتی کا الزام لگایا گیا تھا، تاہم پاکستانی لڑکی کے فارنزک ٹیسٹ سے دُوسرے ملزم کے ڈی این اے میچ نہیں ہو سکے۔ جس  کی بناء پر اسے شک کا فائدہ دیتے ہوئے بری کیے جانے کا امکان ہے جبکہ 17 سالہ ملزم کو اس مقدمے کی 21 مئی 2019ءکو ہونے والی اگلی سماعت پر سزا سُنائے جانے کا قوی امکان ہے۔

دبئی میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments