دُبئی: امتحانات میں پاس کرانے کے بہانے اُستاد کی طالب علم سےجنسی چھیڑ چھاڑ

بزرگ اُستاد 15 سالہ لڑکے کو سکول کے ایک زیر تعمیر کمرے میں لے گیا اور وہاں اس سے غلط حرکات کیں

Muhammad Irfan محمد عرفان جمعہ اکتوبر 14:39

دُبئی: امتحانات میں پاس کرانے کے بہانے اُستاد کی طالب علم سےجنسی چھیڑ ..
دُبئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔4اکتوبر2019ء) دُبئی پولیس نے ایک سکول میں پڑھانے والے 55 سالہ بزرگ اُستاد کو اپنے کم سن شاگرد سے جنسی زیادتی کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔ استغاثہ کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ شام سے تعلق رکھنے والے اُستاد نے اپنے ہم وطن 16 سالہ لڑکے کو امتحان میں پاس کرانے کے بہانے اس سے جنسی زیادتی کی۔ متاثرہ لڑکے نے بتایا کہ وہ اپنے سکول ٹیسٹ کا نتیجہ وصول کرنے کے لیے اپنی والدہ کے ساتھ سکول گیا۔

اُس کی والدہ ایڈمنسٹریشن آفس میں بیٹھی تھیں جبکہ وہ اپنے ٹیچرز سے ملاقات کرنے کے لیے چلا گیا۔ کلاس رُوم سے باہر مجھے میرے ہم وطن بزرگ اُستاد ملے۔ میں نے انہیں بتایا کہ میں دو مضامین میں فیل ہو گیا ہوں۔تو انہوں نے کہا کہ کوئی بات نہیں، میں تمہیں اگلے امتحانات میں پاس کروا دوں گا۔

(جاری ہے)

اس کے بعد انہوں نے مجھے اپنے ساتھ کہیں چل کر بات کرنے کو کہا۔

وہ مجھے ایک خالی کلاس روم میں لے گئے اور مجھے اپنے ساتھ بٹھا کر نازیبا باتیں کرنے لگیں اور مجھے زبردستی گلے لگا کر چُومنا چاہا اور کئی دوسری غلط حرکات بھی کرنے لگے۔ مگر جب میں نے ان کی بات ماننے سے انکار کیا تو انہوں نے مجھے چھوڑ دیا اور تاکید کی کہ میں اس بات کا کسی سے ذکر نہ کروں۔ وہ مجھے اگلے امتحانات میں پاس کروا دیں گے۔ اس دوران میری والدہ پندرہ منٹ تک میرا انتظار کرتی رہیں اور مجھے کال بھی ملائی جو کہ میں نے اٹینڈ نہ کی۔

میرا یہ بزرگ اُستاد مجھے لے کر والدہ کے پاس آ گیا اور ان کے سامنے مجھے اپنا نمبر دے کر کہنے لگا کہ اس کی تیاری اچھی نہیں ہے، میں اس کو شام کے وقت ٹیوشن پڑھا دیا کروں گا۔مگر ان کے جانے کے بعد میں نے والدہ کو ساری بات بتا دی۔ میری والدہ یہ سُن کر غصے میں آ گئیں اور انہوں نے سکول کی انتظامیہ سے کہہ دیا کہ وہ اس معاملے پر پولیس میں رپورٹ درج کرانے جا رہی ہیں۔

متعلقہ عنوان :

دبئی میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments