امارات واپس جانے کے منتظر پاکستانیوں کو مزید انتظار کرنا ہوگا

اماراتی حکومت نے پاکستان سے آنے والے مسافروں پر پابندی میں 7 جولائی تک توسیع کر دی، مزید توسیع بھی کی جا سکتی ہے

Muhammad Irfan محمد عرفان منگل جون 12:13

امارات واپس جانے کے منتظر پاکستانیوں کو مزید انتظار کرنا ہوگا
دُبئی(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔15جون 2021ء) متحدہ عرب امارا ت جانے کے منتظر پاکستانیوں کے لیے بُری خبر آ گئی ہے۔ امارات نے پاکستان سے آنے والی پروازوں پر عائد پابندی کی مُدت میں ایک بار پھر توسیع کر دی ہے۔ چند روز پہلے حکام نے پاکستانی مسافروں کے امارات واپسی پر عائد پابندی کی مُدت میں 30 جون تک کی توسیع کی تھی تاہم اب نئے اعلان کے مطابق یہ پابندی بڑھا کر7جولائی تک کر دی گئی ہے۔

اتحاد ایئر کی ویب سائٹ پر بتایا گیا ہے کہ پاکستان سے امارات واپسی پر عائد پابندی میں 7 جولائی کے بعد مزید توسیع بھی ہو سکتی ہے۔ جس کی وجہ سے پاکستان میں پھنسے ہزاروں اماراتی ویزہ ہولڈرز کی اگلے ایک ماہ تک واپسی نہیں ہو سکے گی۔ اس فیصلے نے ہزاروں پاکستانیوں کو مایوس کر دیا ہے۔

(جاری ہے)

کیونکہ امارات جلد واپسی نہ ہونے سے ان کی نوکریاں خطرے میں پڑ گئی ہیں۔

جبکہ کئی پاکستانیوں کے امارات میں تعلیم کا سلسلہ بھی متاثر ہو رہا ہے۔یو اے ای ایوی ایشن حکام نے 7 جولائی تک توسیع کا جو حکم نامہ جاری کیا ہے اس کے مطابق یہ پابندی پاکستان، بھارت، بنگلہ دیش، نیپال، سری لنکا، نائجیریا اور جنوبی افریقہ سے آنے والے مسافروں پر لگائی گئی ہے۔ دُبئی کی حکومت چند روز قبل ایئر لائنز کو ہدایت کی ہے کہ پاکستان سمیت پابندی والے ممالک کے مسافروں کو دُبئی یا ٹرانزٹ کے لیے بورڈنگ کارڈ جاری نہ کیاجائے۔

تمام ایئر لائنز کو متعلقہ ملکوں سے سفر کے خواہش مند مسافروں کو بورڈنگ جاری کرنے سے منع کیا گیا ہے۔ہدایت نامے میں کہا گیا تھا کہ 14 دن کیلئے پابندی والے ممالک سے آنے والے مسافروں کو دبئی یا ٹرانزٹ کیلئے بورڈنگ کارڈ جاری نہ کیا جائے۔ اگر کسی ایئر لائن نے اس ہدایت کی خلاف ورزی کی تو اس کو جرمانہ عائد کیا جائے گا یا فضائی آپریشن کے حوالے سے کارروائی کی جائے گی۔

اب یہ پابندی 6 جولائی تک بڑھا دی گئی ہے۔ واضح رہے کہ 12 مئی سے پاکستان کے علاوہ بنگلہ دیش، سری لنکا اور نیپال سے آنے والی مسافر پروازوں پر بھی عائد کی گئی تھی۔جس کی وجہ ان ممالک میں کورونا کیسز بڑھنا بتائی گئی تھی۔ اماراتی حکام کی جانب سے کہا گیا تھا کہ اس پابندی کے بعد ٹرانزٹ ویزہ والے مسافروں کو بھی یو اے ای آنے کی اجازت نہیں ہو گی۔

یہ پابندی پاکستان سے آنے والی مقامی ایئر لائنز کے ساتھ ساتھ تمام بین الاقوامی ایئر لائنز پر بھی لاگو ہے۔ البتہ دیگر ممالک سے پاکستان جانے والے مسافروں کو ٹرانزٹ ویزہ پر امارات رُکنے کی اجازت ہو گی۔ ان پر اس پابندی کا اطلاق نہیں ہوگا۔ کیونکہ یہ پابندی پاکستان سے آنے والے مسافروں پر عائد کی گئی ہے۔
اماراتی حکام نے واضح کیا تھا کہ پاکستان سے آنے والی کارگو فلائٹس اس پابندی سے مستثنیٰ ہوں گی۔

البتہ پاکستان سے اماراتی شہریوں کو امارات واپس آنے کی اجازت ہو گی۔ اسی طرح سفارتی مشنز، سرکاری وفود، گولڈل ویزہ ہولڈرز بھی امارا ت واپس جا سکیں گے اور بزنس مین طبقہ اپنے ذاتی جہازروں پر بھی امارات پہنچ سکے گا۔ NCEMA نے واضح کیا ہے کہ پابندی سے مستثنیٰ ان تمام مسافروں کو فلائٹ سے قبل پی سی آر ٹیسٹ کروا کر نیگیٹو رپورٹ حاصل کرنا ہوگی۔ یہ ٹیسٹ رپورٹ پرواز کے وقت 48 گھنٹے سے زائد پُرانی نہ ہو، ورنہ نئی رپورٹ حاصل کرنا لازمی ہوگا۔ یو اے ای کے ایئرپورٹ پر اُترتے ہی ان مسافروں کا موقع پر پی سی آر ٹیسٹ لیا جائے گا۔ جس کے بعد انہیں 10روز قرنطینہ میں رہنا ہو گا۔ اسی دوران ان مسافروں کا چوتھے روز اور پھر آٹھویں بھی پی سی آر ٹیسٹ لیا جائے گا۔

دبئی میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments